بلوچستان میں امن و امان کی ذمہ داری فوج کے سپرد کرنے کافیصلہ

بلوچستان میں امن و امان کی ذمہ داری فوج کے سپرد کرنے کافیصلہ

اسلام آباد، کوئٹہ (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم نے بلوچستان میں امن و امان کی صورتحال کی ذمہ داری پاک فوج کے سپرد کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے جس کے بعد منظر سے غائب بلوچستان کے وزیراعلیٰ نواب محمد اسلم خان رئیسانی بھی سامنے آ گئے ہیں اور انہوں نے گورنر ذوالفقار مگسی سے ٹیلی فون پر رابطہ کر لیا ہے۔ ایکسپریس نیوز کے مطابق دھماکوں میں جاں بحق ہونے والوں کی 90 لاشوں کے ساتھ طویل احتجاجی دھرنے کے بعد وزیراعظم نے مظاہرین کے احتجاج کو درست اور جائز قرار دیا ہے اور فیصلہ کیا ہے کہ بلوچستان خاص طور پر کوئٹہ میں امن و امان اور انتظامی امور کی ذمہ داریاں پاک فوج کے سپرد کی جائیں گی تاہم اس کا اعلان آئینی و قانونی پیچیدگیوں اور فوجی حکام کی مشاورت کے بعد کسی وقت بھی کر دیا جائے گا۔ اس وقت تک اس کا طریقہ کار وضع کیا جا رہا ہے۔ اب تک کی اطلاعات کے مطابق کوئٹہ کے کور کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل محمد عالم خٹک کو نگران مقرر کیا جائے گا۔ سماج دشمن عناصر کے خلاف ایف سی فوری طور پر کوئٹہ میں ٹارگٹڈ آپریشن کرے گی۔ دوسری جانب تین روز سے منظر سے غائب بلوچستان کے وزیراعلیٰ نواب محمد اسلم خان رئیسانی نے بلوچستان کے گورنر سردار ذوالفقار مگسی سے لندن سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا ہے اور صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ وہ دو روز کے اندر وطن واپس پہنچ رہے ہیں۔ دریں اثناءبلوچستان حکومت کے ترجمان نے واضح کیا ہے کہ وزیراعلیٰ اسلم رئیسانی کسی صورت مستعفی نہیں ہوں گے۔

مزید : کوئٹہ /اہم خبریں

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...