وزیراعظم کی زیرصدارت اجلاس میں کوئٹہ کے بعض علاقوں میں ٹارگٹڈ آپریشن کی منظوری ، مطالبات پر غور کیلئے آئینی ماہرین سے مشاورت

وزیراعظم کی زیرصدارت اجلاس میں کوئٹہ کے بعض علاقوں میں ٹارگٹڈ آپریشن کی ...
وزیراعظم کی زیرصدارت اجلاس میں کوئٹہ کے بعض علاقوں میں ٹارگٹڈ آپریشن کی منظوری ، مطالبات پر غور کیلئے آئینی ماہرین سے مشاورت

  

کوئٹہ (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کی زیرصدارت ہونیوالے اجلاس میں کوئٹہ کے بعض علاقوں میں ٹارگٹڈ آپریشن کی منظوری دیدی گئی ہے جبکہ شہرمیں ایمرجنسی لگانے پر غور کیاجارہاہے جبکہ کابینہ کے چاراراکین نے وزیراعلیٰ بلوچستان سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کردیا۔ نجی چینل کے مطابق گورنرہاﺅس میں وزیراعظم کی زیرصدارت ہونے والے اجلاس میں کوئٹہ میں دھماکوں کے بعد کی صورتحال پر غورکیاگیا اور وزیراعظم کو بلوچستان کی صورتحال پر بریفنگ دی گئی ۔ اجلاس میں جرائم پیشہ افراد کے خلاف ٹارگٹڈ آپریشن کی باقاعدہ منظوری دی گئی جبکہ فورسز کی استعداد کار بڑھانے کا فیصلہ بھی کیاگیاہے ۔ ذرائع کے مطابق صوبائی حکومت کے خاتمے کے مطالبے پر غور اور قانونی ماہرین سے مشاورت جاری ہے ۔ دنیانیوز کے مطابق کابینہ کے چاراراکین نے وزیراعلیٰ بلوچستان سے مستعفی ہونے کامطالبہ کردیااوراُن کاکہناتھاکہ اگر وزیراعلیٰ مستعفی نہ ہوئے تو اُنہیں برطرف کردیاجائے گا۔واضح رہے کہ آج تیسرے دن بھی کوئٹہ کے علمدار روڈ پر ہزارہ کمیونٹی کے دھماکے میں شہید ہونیوالے افراد کے لواحقین لاشیں رکھ کر دھرنادیئے ہوئے ہیں اور اب احتجاج کا سلسلہ پورے پاکستان کے علاوہ بیرون ملک تک پھیل چکاہے ۔

مزید : قومی