اسٹیل بلٹس بارز اور وائر راڈز کی درآمد پر 15 فیصدڈیوٹی سے انڈسٹری بحال ہوگی

اسٹیل بلٹس بارز اور وائر راڈز کی درآمد پر 15 فیصدڈیوٹی سے انڈسٹری بحال ہوگی

کراچی(اے پی پی) اسٹیل بلٹس بارز اور وائر راڈز کی درآمد پر 15 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کرنے سے اسٹیل انڈسٹری دوبارہ بحال ہو سکے گی۔ پیر کو جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق پاکستان اسٹیلز میلٹرز ایسوسی ایشن نے حکومت کی جانب سے درآمدی اسٹیل مصنوعات مثلا ً اسٹیل بلٹس بارز اور وائر راڈز کی درآمد پر 15 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کرنے کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس بروقت اقدام سے درآمدی مصنوعات کی وجہ سے تباہی کا شکار اسٹیل انڈسٹری دوبارہ بحال ہو سکے گی۔ مقامی اسٹیل انڈسٹری درآمدی اسٹیل مصنوعات کی فراوانی کی وجہ سے شدید متاثر ہورہی تھی اور مختلف درآمدی اور مقامی طور پر تیار شدہ اسٹیل مصنوعات میں 9 ہزار سے 14 ہزار روپے فی ٹن تک کا نمایاں فرق پیدا ہو چکا تھا۔ اسٹیلز میلٹرز ایسوسی ایشن کے نمائندے کے مطابق حکومت کے بروقت فیصلے کی وجہ سے مقامی اسٹیل انڈسٹری نہ صرف یہ کہ ٹیکس اور ڈیوٹی کی مد میں بلکہ روزگار کی مواقعوں اور نئے سرمایہ کاری کرنے کے قابل ہو جائے گی۔ انڈسٹری کے مطابق پچھلے 12 ماہ میں ملک میں ایک لاکھ 75 ہزار ٹن سے زائد اسٹیل مصنوعات درآمد کی گئی ہیں جس کی بنیادی وجہ دنیا میں اسٹیل مصنوعات کے استعمال میں کمی اور پاکستان میں انڈر انوائسنگ کے ذریعے ڈیوٹی چوری کرکے مصنوعات کو کلیئر کرانا شامل ہے۔ پاکستان اسٹیلز میلٹرز ایسوسی ایشن نے کہا کہ حالیہ فیصلے سے ملک میں بند ہو جانے والے اسٹیل کارخانے دوبارہ پیداوار کا عمل شروع کر کے ملکی معاشی ترقی میں اپنا کردار ادا کریں گے اور بڑے پیمانے پر روزگار کے ذرائع پیدا ہوں گے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ مقامی صنعت کو تحفظ فراہم کرکے ملک کو صنعتی معیشت بنایا جائے اور اسے درآمدی مصنوعات کی تجارت کا مرکز نہ بننے دیا جائے کیونکہ اس کا تمام فائدہ صرف مصنوعات برآمد کرنے والے ممالک اٹھاتے ہیں۔

مزید : کامرس