6 ڈویثرنز میں مشین گنوں سے لیس کمانڈر نے سرکاری و نجی سکولوں کی سیکورٹی سنبھال لی

6 ڈویثرنز میں مشین گنوں سے لیس کمانڈر نے سرکاری و نجی سکولوں کی سیکورٹی ...

لاہور(کرائم سیل)صوبائی دارالحکومت کی 6ڈویژنوں میں مشین گن سمیت جدید اسلحہ سے لیس اعلیٰ تربیت یافتہ کمانڈوزنے سرکاری ونجی سکولوں کی سکیورٹی سنبھال لی جبکہ ان کے ہمراہ پولیس لائن سے تربیت حاصل کرنے والے 5ہزار زائد سیکیورٹی گارڈز بھی موجود ہیں، کینٹ ڈویژن حساس قرار۔ بتایا گیا ہے کہ سی سی پی او لاہور اور ڈی آئی جی آپریشنزلاہور کے متفقہ فیصلے کے بعد کھلنے والے تعلیمی اداروں کی سیکیورٹی کے لئے نفری پولیس لائن سے بھیجنے کی بجائے 6ڈویژنوں سے اعلیٰ تربیت یافتہ کمانڈوز کو بھجوا دیا گیا جنکے پاس مشین گن سمیت جدید اسلحہ موجود ہے، کینٹ ڈویژن میں 200کمانڈوز جدید اسلحہ سمیت موجود ہیں، ماڈل ٹاؤن ڈویژن میں 66، اقبال ٹاؤن ڈویژن میں 51 اور سٹی ڈویژن میں 37کمانڈوز تعینات کئے، سیکیورٹی پلان کے مطابق تمام کمانڈوز آپس میں بذریعہ وائر لیس رابطے میں رہیں گئے اور کسی بھی خطرے کے پیش نظر ایک دوسرے کی مددبھی کر سکتے ہیں ، ان کمانڈوز کی نگرانی میں سکولوں کے ایسے 5ہزار سیکیورٹی گارڈز بھی جدید اسلحہ سے لیس سیکیورٹی پر مامور ہیں، جنہیں قلعہ گوجر سنگھ پولیس لائن میں ٹریننگ دی گئی ہے تمام سکولوں کی دیواروں کے اوپر خار دار تاریں لگا دی گئی ہیں جبکہ اس حوالے سے پولیس کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ سکولوں کی سکیورٹی بہتر نہ کرنے والے تعلیمی اداروں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی اور سرکاری و نجی سکولوں کو کمانڈوز فراہم کئے گئے ہیں۔صوبائی دارالحکومت میں واقع قانون نافذ کرنے والے اداروں نے 370تعلیمی اداروں کو حساس قرار دے دیا گیاجبکہ ان کی سیکیورٹی کو مزید بہتر بنانے کے لئے پولیس دفاتروں میں کنٹرول روم بھی قائم کرنے کا فیصلہ، سانحہ آرمی پبلک سکول پشاور کے بعد سیکیورٹی خدشات کی بناء پر تعلیمی اداروں کو بند کرنے کے بعد کھول دیا گیا، ذرائع کے مطابق لاہور کے 370تعلیمی اداروں کو حساس قرار دیتے ہوئے پولیس نے انتظامیہ کے ساتھ مل کر پینک سسٹم لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔ادھر صوبائی دارالحکومت میں ممکنہ دہشت گردی اور ملکی حالات کے پیش نظر سینما گھروں اور تھیٹروں کی سکیورٹی کو مزید سخت کر دیے گئے ہیں، تھیٹر، سینما مالکان وپروڈیوسروں نے پنجاب پولیس کی جانب سے ملنے والی ہدایات کے بعدسیکیورٹی میں مزید اضافہ کر دیاہے تاکہ کوئی ناخوشگوار واقعہ رونما نہ ہوسکے۔

مزید : علاقائی