تحریک انصاف کے ارکان کے استعفوں کا معاملہ اسمبلیاں خود ہی حل کرلیں تو بہتر ہوگا ،لاہور ہائی کورٹ

تحریک انصاف کے ارکان کے استعفوں کا معاملہ اسمبلیاں خود ہی حل کرلیں تو بہتر ...
تحریک انصاف کے ارکان کے استعفوں کا معاملہ اسمبلیاں خود ہی حل کرلیں تو بہتر ہوگا ،لاہور ہائی کورٹ

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان، اراکین پنجاب اسمبلی میاں محمود الرشید اور احمد خان بھچر کے استعفے منظور کرانے کے لئے دائر تمام درخواستیں یکجا کرنے کی ہدایت دیتے ہوئے قرار دیا ہے کہ عدالت اس کیس کے ابتدائی مرحلے پر کہہ چکی ہے کہ اسمبلیاں خود ہی اس معاملے کا حل نکال لیں تو بہتر ہے۔مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے یہ کارروائی پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید اور ایم پی اے احمد خان بھچر کے استعفے منظور کرانے کے لئے قاضی مبین ایڈووکیٹ کی طرف سے دائر درخوات پر کی ۔درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ آئین کے تحت کسی حلقے کو غیرمعینہ مدت تک عوامی نمائندگی سے محروم نہیں رکھا جا سکتا لیکن تحریک انصاف کے اراکین اسمبلی نے استعفے دے کر اپنے حلقوں کو عوامی نمائندگی سے محروم رکھا ہوا ہے جو آئین کی خلاف ورزی ہے، پی ٹی آئی اور حکومت دونوں میں سے کوئی بھی اس بات کی تصدیق یا تردید نہیں کر رہا کہ استعفے رضامندی سے دیئے گئے یا نہیں ، انہوں نے مزید موقف اختیار کیا کہ سپیکر اسمبلی کو یہ اختیار نہیں ہے کہ وہ کسی رکن اسمبلی کا استعفیٰ مسترد کرے، لہذا انہیںپی ٹی آئی کے اراکین اسمبلی کے استعفے منظور کرنے کا حکم دیا جائے، سپیکر پنجاب اسمبلی کے وکیل مصطفی رمدے نے بتایا کہ اسی نوعیت کی ایک درخواست ہائیکورٹ کے راولپنڈی بنچ میں بھی زیر التواءہے جس میں درخواست گزار ارسلان افتخار نے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا استعفیٰ منظور کرنے کی استدعا کررکھی ہے ، اس درخواست کو بھی سماعت کے لئے صدرنشست لاہور پر منتقل کیا جائے جس پر عدالت نے عمران خان، میاں محمود الرشید اور احمد خان بھچر کے استعفے منظور کرانے کی تمام درخواستیں یکجا کرنے کا حکم دیتے ہوئے قرار دیا کہ عدالت اس کیس کے ابتدائی مرحلے پر کہہ چکی ہے کہ اسمبلیاں خود ہی اس معاملے کا حل نکال لیں تو بہتر ہے، عدالت نے اس کیس کی مزید سماعت کے لئے 23 فروری کی تاریخ مقرر کی ہے۔

مزید : لاہور