اگر آپ کو کافی پینے کا مزہ نہیں آرہا تو مگ تبدیل کرلیں، تحقیق میں ایسا انکشاف کہ آپ ابھی کپ تبدیل کرلیں گے

اگر آپ کو کافی پینے کا مزہ نہیں آرہا تو مگ تبدیل کرلیں، تحقیق میں ایسا انکشاف ...
اگر آپ کو کافی پینے کا مزہ نہیں آرہا تو مگ تبدیل کرلیں، تحقیق میں ایسا انکشاف کہ آپ ابھی کپ تبدیل کرلیں گے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن(نیوزڈیسک) ایک تازہ تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ جس مگ میں آپ چائے پیتے ہیں اس کی ساخت کی وجہ سے کافی کا ذائقہ تبدیل محسوس ہوتاہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ لمبے مگوں میں دی جانے والی کافی زیادہ میٹھی محسوس ہوتی ہے جبکہ چھوٹے کپوں والی کافی میں مٹھاس کم لگتی ہے۔ اسی طرح جن لوگوںکو تنگ مگوں میں مشروب دیا جاتا ہے وہ اپنے مشروب کو زیادہ کڑوا پاتے ہیں جبکہ کھلے کپوںمیں پینے والے افراد کو یہی مشروب کم کڑوالگتا ہے۔

چین، کولمبیا اور برطانیہ سے300سے زائد رضاکاروں جن کی عمریں 17اور60سال کے درمیان تھیں کو آٹھ مختلف کافی کے مگوں کو ریٹ کرنے کا کہا گیا۔آکسفورڈ یونیورسٹی کے تحقیق کار ڈاکٹر اینڈی ووڈز کاکہنا تھا کہ تحقیق کا مقصد یہ جاننا تھا کہ کافی کے مگوں کی ہیت تبدیل ہونے پر لوگوںکواس کے ذائقے میں کیا تبدیلی محسوس ہوتی ہے۔ نتائج میں یہ بات سامنے آئی کہ پینے والے کوکپ کا قطر اور لمبائی کا کافی کی خوشبو، کڑواہٹ اور شدت پر اثر محسوس ہوتا ہے۔”چوڑے قطر کے حامل کپوں والی کافی تنگ مگوں والی کافی سے زیادہ میٹھی لگتی ہے۔اسی طرح لمبے مگوں میں دی جانے والی کافی کم کڑوی لگتی ہے جبکہ یہی کافی اگر چھوٹے مگوں میں دیا جائے تو زیادہ کڑوی لگتی ہے۔“ یہ بات بھی سامنے آئی کہ چینی لوگ چھوٹے کپوں کو ترجیح دیتے ہیں جبکہ کولمبیا اور برطانیہ کے لوگوں کو لمبے مگ پسند ہیں۔ ”سب سے حیران کن بات یہ ہے کہ تمام ہی افراد بڑے کپوں کے لئے زیادہ پیسے دینے کے لئے تیار تھے۔“ڈاکٹر اینڈی کا کہنا ہے کہ مگوں کی ہیت کی وجہ سے لوگ مشروب کی کوالٹی اور ذائقہ میں تبدیلی کی خواہش رکھتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس