کھاد پر سبسڈی ختم کئے جانے سے کسانوں کی مشکلات بڑھ گئیں،ملک بھر میں کاشت شدہ فصلیں متاثر ہونے کا خدشہ

کھاد پر سبسڈی ختم کئے جانے سے کسانوں کی مشکلات بڑھ گئیں،ملک بھر میں کاشت شدہ ...

کراچی(این این آئی)کھاد پر سبسڈی ختم کئے جانے سے کسانوں کی مشکلات بڑھ گئی ہیں۔ملک بھر میں کاشت شدہ گندم،کماد اور مٹر کی فصل متاثر ہونے کا اندیشہ ہے۔ذرائع کے مطابق زراعت ملکی کی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثت رکھتی ہے ،لیکن حکومت کی کسان کش پالیسیاں ختم نہیں ہوسکی ہیں ،مالی سال 2016 کے بجٹ میں کسانوں کے لئے اعلان کردہ سبسڈی ختم کردی گئی جس سے کسان کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگیاہے۔سبسڈی ختم ہونے سے یوریا کی 1300 روپے میں دستیاب بوری 1700جبکہ ڈی اے پی کی 2400 میں ملنے والی بوری کی قیمت 2800 تک جاپہنچی ہے، اس وقت گندم کی فصل کو بڑھوتری کے باعث یوریا کھاد کی شدید ضرورت ہے۔

لیکن مہنگی ہونے کے سبب کسان کھاد کو کم استعمال کرنے پر سوچ رہے ہیں۔کھاد کے کم استعمال سے گندم کے ساتھ ساتھ کماد اور مٹر کی فصل بھی متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔

مزید : کامرس