شاہین مارچ سے 7ہفتوں کیلئے ویسٹ انڈیز میں بسیرا کرینگے

شاہین مارچ سے 7ہفتوں کیلئے ویسٹ انڈیز میں بسیرا کرینگے

باربڈوس (آئی این پی)ویسٹ انڈیز رواں سال مارچ سے 7 ہفتوں کیلئے پاکستانی ٹیم کی میزبانی کرے گا، جہاں دونوں ٹیموں کے درمیان دو ٹی20، تین ایک روزہ اور تین ٹیسٹ میچ کھیلے جائیں گے۔یہ پاکستان کا 2013 کے بعد سے ویسٹ انڈیز کا پہلا دورہ ہو گا جہاں گزشتہ دورے میں گرین شرٹس نے پانچ ایک روزہ میچوں کی سیریز 3۔1 سے جیتنے کے ساتھ ساتھ ٹی20 سیریز میں کلین سوئپ کیا تھا جبکہ 2011 کے بعد سے دونوں ٹیموں کے درمیان کیرریبیئن جزائر میں پہلی ٹیسٹ سیریز ہو گی۔لیکن حیران کن بات یہ ہے کہ تمام تر قیاس آرائیوں اور دونوں ممالک کے بورڈز کے درمیان گفتگو کے باوجود ویسٹ انڈیز کے دورہ پاکستان کے حوالے سے کوئی معاہدہ منظر عام پر نہیں آیا۔پی سی بی کے چیئرمین شہریار خان نے عندیہ دیا تھا کہ ویسٹ انڈین ٹیم رواں سال مارچ میں 2 ٹی ٹوئنٹی میچ کھیلنے کیلئے لاہور آئے گی لیکن فیکا نے پاکستان کو غیرمحفوظ قرار دیتے ہوئے کھلاڑیوں کو پاکستان کا رخ نہ کرنے کیلئے خبردار کر کے اس دورے پر کاری ضرب لگائی تھی۔دورے کیلئے ضروری تھا کہ دونوں ملکوں کے درمیان معاہدے کو ویسٹ انڈین پلیئرز ایسوسی ایشن منظور کرے اور پھر کلیئرنس بھی دی جائے۔پاکستان کے دورہ ویسٹ انڈیز کا آغاز 31 مارچ کو پورٹ آف اسپین میں ٹی ٹوئنٹی میچ سے ہو گا جبکہ پھر دوسرا ٹی20 بھی 2 اپریل کو یہیں کھیلا جائے گا۔دونوں ٹیموں کے درمیان ایک روزہ میچوں کی سیریز پروویڈنس میں کھیلی جائے گی جبکہ 7، 9 اور 11 اپریل کو میچ ہوں گے۔22 اپریل سے کنگسٹن میں پہلے ٹیسٹ میچ سے قبل پاکستان ایک سہ روزہ ٹور میچ بھی کھیلے گا جس کے بعد سیریز کے بقیہ دونوں میچز برج ٹاؤن اور رسیو میں کھیلے جائیں گے۔یاد رہے کہ گزشتہ سال دونوں ملکوں کے درمیان متحدہ عرب امارات میں تینوں فارمیٹس کی سیریز کھیلی گئی تھی، جس میں مہمان ٹیم کو شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔پاکستان نے ٹی ٹوئنٹی اور ون ڈے سیریز میں کلین سوئپ کیا تھا لیکن ٹیسٹ سیریز کے آخری میچ میں کریگ بریتھ ویٹ نے جرات مندانہ بیٹنگ کی بدولت اپنی ٹیم کو پانچ وکٹ کی فتح سے ہمکنار کرایا تھا۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی