والدین کی خدمت میں عظمت

والدین کی خدمت میں عظمت

مکرمی!رسول پاکؐ نے فرمایا:’’ مسلمانو! اپنے والدین کے ساتھ نیکی کا برتاؤ کرو تاکہ تمہاری اولاد بھی تمہارے ساتھ نیکی سے پیش آئے‘‘۔حدیث شریف میں ہے کہ اللہ تعالیٰ کی رضا ماں باپ کی رضا میں ہے اور اللہ کا غصہ ماں باپ کی ناراضگی میں پوشیدہ ہے۔ حضرت ابن عباسؓ فرماتے ہیں: ’’جس مسلمان کے ماں باپ زندہ ہیں اور وہ صبح دم اجرو ثواب کے لئے ان کی خدمت میں سلام و مزاج پرستی کے لئے حاضر ہوتا ہے تو رب ذوالجلال اس کے لئے جنت کے دروازے کھول دیتا ہے اور اگر دونوں میں سے کسی ایک کو خفا کیا اور غصہ دلایاتو جب تک وہ راضی اور خوش نہ ہو اللہ تعالیٰ بھی خوش نہیں ہوتا۔ ارشاد نبوی ہے : ’’وہ آدمی ذلیل ہو، پھر ذلیل ہو، پھر ذلیل ہو، جس نے اپنے ماں باپ کو بڑھاپے کی حالت میں پایا اور پھربھی ان کی خدمت کر کے جنت میں داخل نہ ہوا‘‘۔ ماں باپ کی اصل طاقت ان کی نیک اولاد ہے۔ ماں باپ کمزور، بیمار اور بوڑھے تب ہی ہوتے ہیں جب ان کی اپنی اولاد ان کو پریشان رکھتی ہو،لہٰذا ماں باپ کی عزت کرو،ان کی ضروریات کا خیال رکھو تاکہ آپ کی اولاد آپ کی عزت کرے، کیونکہ جو آپ کریں گے وہی آپ کے ساتھ ہوگا۔علاوہ ازیں والدین کا نافرمان جہنمی ہے۔ والدین کی موت کے بعد ان کے لئے دعائے مغفرت اور توبہ، استغفار کرنا، ان کی وصیت کوپورا کرنا، ان کے قرابت داروں سے صلہ رحمی کرنا اور ان کے عزیز و اقارب اور دوستوں کی تعظیم و تکریم کرنا ضروری ہے۔ بوڑھے والدین کی خدمت کرنا ہمارے لئے بیش بہا سرمایہ ہے۔ اس سے نہ صرف ہمارے بزرگ خوش ہوں گے، بلکہ اللہ تعالیٰ ہمیں جنت میں داخل کرے گا۔انسان ذرا توجہ فرمائے کہ والدین نے آپ کے دکھ درد اور بیماری میں ساری ساری رات آنکھوں میں گزاری، آپ تو ان کی ایک رات کا بھی صلہ نہیں دے سکتے۔ اکثر لوگ کہتے ہیں کہ کسی ایک کے چلے جانے سے زندگی رک نہیں جاتی،لیکن یہ کوئی نہیں جانتا کہ لاکھوں کے مل جانے سے بھی حقیقی ماں کی کمی کبھی پوری نہیں ہوسکتی۔بزرگوں کو اولڈ ہومز میں چھوڑنا، ان سے بد سلوکی اور بد اخلاقی سے پیش آنا اسلام کے منافی حرکات ہیں۔ یادرکھئے ماں کی خدمت سے جنت تو مل جاتی ہے، مگر جنت کا دروازہ اس وقت کھلتا ہے جب باپ کی بھی عزت کی جائے۔ دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ سب کو والدین کی خدمت کی توفیق عطا فرمائے ۔آمین(رب نواز صدیقی، پاک پتن شریف)

مزید : اداریہ