گورنر پنجاب سے ادیب جاودانی کی ملاقات پرائیویٹ سکولز کو درپیش مشکلات سے آگاہ کیا

گورنر پنجاب سے ادیب جاودانی کی ملاقات پرائیویٹ سکولز کو درپیش مشکلات سے آگاہ ...

لاہور (ایجوکیشن رپورٹر) آل پاکستان پرائیویٹ سکولز مینجمنٹ ایسوسی ایشن کے مرکزی صدر ادیب جاودانی نے پنجاب کے گورنر ملک محمد رفیق رجوانہ سے ملاقات کی اور ان سے مطالبہ کیا کہ پنجاب اسمبلی نے مارچ 2016ء میں پرائیویٹ سکولوں کے خلاف جو بل پاس کیا ہے۔ اس سے پرائیویٹ سکول بہت سی مشکلات کا شکار ہوگئے ہیں۔ پرائیویٹ سکول فروغ تعلیم کیلئے کام کر رہے ہیں۔ پنجاب حکومت ان کو ان تعلیمی اداروں کی حوصلہ افزائی کرنی چاہیئے۔ اس بل کی موجودگی میں پرائیویٹ سکولز کا چلنا بہت مشکل ہوگیا ہے۔ اس بل کی وجہ سے پنجاب کے ہزاروں پرائیویٹ سکولز بند ہوگئے ہیں۔ آپ پرائیویٹ سکولوں کو اپنے اخراجات پورے کرنے کیلئے ایک ایسا آرڈی ننس جاری کریں جس کے مطابق پرائیویٹ سکولز فیسوں میں مناسب اضافہ کرسکیں۔ گورنر پنجاب نے ادیب جاودانی کے مطالبے پر 10جنوری 2017ء کو ایک آرڈی ننس جاری کر دیا ہے جس کے مطابق جو سکول چار ہزار یا اس سے زائد فیس لے رہیں ہیں وہ سالانہ 5 فیصد تک اضافہ کر سکتے ہیں اور جو سکول چار ہزار سے کم فیس لے رہے ہیں ان پر 5 فیصد تک اضافے کی پابندی عائد نہیں کی گئی۔ ادیب جاودانی نے کہا کہ گورنر پنجاب کے اس آرڈی ننس سے پرائیویٹ سکولوں کی مشکلات کافی حد تک کم ہو جائیں گی اور وہ فروغ تعلیم کیلئے دلجمعی سے کام کرسکیں گے۔ اور جو سکول چار ہزار روپے سے زائد فیس وصول کر رہے ہیں ان کے لئے ضروری ہے کہ اگر انہوں نے فیسوں میں 5 فیصد اضافہ کرنا ہے تو اس کیلئے انہیں رجسٹرنگ اتھارٹی کو درخواست دینا ہوگی۔ اور رجسٹرنگ اتھارٹی اس بارے میں فیصلہ کرے گی کہ سکول کو 8 فیصد تک فیس بڑھانے کی اجازت ہوگی کہ نہیں۔

مزید : صفحہ آخر