شاعرہ، کالم نگار،فلم رائٹر اور نغمہ نگار رخسانہ نور انتقال کر گئیں

شاعرہ، کالم نگار،فلم رائٹر اور نغمہ نگار رخسانہ نور انتقال کر گئیں

لاہور(فلم رپورٹر)معروف شاعرہ، کالم نگار،فلم رائٹر اور نغمہ نگار رخسانہ نور گزشتہ روز طویل علالت کے بعد انتقال کرگئیں وہ عرصہ دراز سے کینسر جیسے موذی مرض میں مبتلاء تھیں۔ان کی عمر 60برس تھی ۔رخسانہ نورنے1980ء میں ایک قومی روزنامہ سے اپنی عملی زندگی کا آغاز کیا ۔1984ء میں شہرہ آفاق رائٹر ،ڈائریکٹر سید نور سے شادی کے بعد انہوں نے اپنے شوہر کی ڈائریکشن میں بنائی جانے والی کئی سُپر ہٹ فلموں کی کہانیاں اور نغمے لکھے۔مرحومہ نے جن فلموں کی کہانی اور گیت لکھے ان میں ’’چوڑیاں‘‘،’’جھومر‘‘،’’مجاجن‘‘،’’لڑکی پنجابن‘‘،’’دوپٹہ جل رہا ہے‘‘،’’مہندی والے ہتھ‘‘اور ’’سنگم ‘‘شامل ہیں۔بلاک بسٹر فلم ’’چوڑیاں‘‘بطور رائٹر اور نغمہ نگار رخسانہ نور کی کامیاب ترین فلم تھی۔ان کے فلمی گیتوں کی کتاب ’’آپیار دل میں جگا‘‘کو بھی غیر معمولی مقبولیت حاصل ہوئی۔ انہوں نے اپنے پسماندگان میں تین بیٹیاں اور ایک بیٹا چھوڑا ہے۔چیئرمین پی ٹی وی عطاء الحق قاسمی،ڈاکٹر صغریٰ صدف،عرفان کھوسٹ ،صوفیہ بیدار،پرویز کلیم،ریشم،راشد محمود ،ڈائریکٹر حسن عسکری ،مسعود بٹ ،پرویز رانا،چوہدری اعجاز کامران،فیصل بخاری،کیپٹن (ر)عطاء محمد خان ،نیلما ناہید درانی،وصی شاہ ،راشد حجازی،جی ایم پی ٹی وی بشارت احمد خان اور ناصر بشیر نے رخسانہ نورکے انتقال پر گہرے رنج وغم کا اظہار کیا ہے اور ان کے انتقال کو ادب کی دنیا کا ایک عظیم نقصان قرار دیتے ہوئے ہوئے کہا ہے کہ مرحومہ قومی سرمایا تھیں اور تمام عمر انہوں نے اپنی پیشہ ورانہ ذمہ داریاں انتہائی احسن طریقے سے انجام دیں۔

رخسانہ نور

مزید : صفحہ اول