گھریلو حالات سے تنگ جاپانی انجینئر نے ہوٹل کی چھت سے کود کر خودکشی کرلی

گھریلو حالات سے تنگ جاپانی انجینئر نے ہوٹل کی چھت سے کود کر خودکشی کرلی

ملتان(کرائم رپورٹر) گھریلو حالات سے تنگ چاپانی انجینئر نے نجی ہوٹل کی چھت سے چھلانگ لگا کر خودکشی کرلی ،پولیس نے(بقیہ نمبر38صفحہ7پر )

لاش قبضے میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لیے ہسپتال منتقل کردی ،وزیر اعلیٰ پنجاب کا نوٹس آر پی او ملتان سے رپورٹ طلب کرلی گئی۔بتایاجا تاہے کہ 11اور12جنوری کی درمیانی شب اولڈ بہاولپور روڈ پر واقع نجی ہوٹل کی چھت سے کود کر جاپانی انجینئر نے خودکشی کرلی۔ اطلاع ملنے پر کینٹ پولیس اور فرانزک موبائل یونٹ موقع پر پہنچ گئی۔ پولیس نے پوسٹ مارٹم کے لیے لاش ہسپتال منتقل کردی۔ جاپانی انجینئر کا نام کٹسومی اکو مورا بتایا گیا ہے ۔مزید معلوم ہوا ہے کہ مرنے والا انجینئر ڈیرہ غازی خان میں نیشنل ہائی وے اتھارٹی کے ساتھ موٹر وے کی تعمیر کے لیے کام کر رہا تھا۔ کینٹ پو لیس نے ہوٹل کو سیل کردیا ہے جبکہ اس کے کمرے کی تلاشی کے دوران جاپانی زبان میں تحریر کردہ خط ملا ہے جس کے لیے جاپانی ترجمان کی خدمات حاصل کی گئیں۔جس نے پولیس کو بتایا کہ خط میں اس نے تحریر کیا ہے "ذہنی دباو ہے ، گھریلو حالات سے تنگ ہوں ،چاند کی چاندنی خوبصورت ہے اس میں مرنے کو دل کر رہا ہے"۔پولیس نے ہوٹل کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی حاصل کر لی ہے جس میں اس کے چھلانگ لگانا واضح طور پر نظر آرہا ہے۔پو لیس کا کہنا ہے کہ نشتر ہسپتال میں اس کے پوسٹ مارٹم کے بعد معدے اور دیگر اجزا لیبارٹری ٹیسٹ کے لیے لاہور بھجوادیے گئے ہیں۔رپورٹ آنے پر معلوم ہوگا آیا کہ اس نے شراب یا کسی زہریلی دوا کا استعمال بھی کیا ہے ،یا نہیں دوسری جانب پولیس کا یہ بھی کہنا ہے کہ خودکشی کرنے والے جاپانی انجینئیر کے ساتھااور بھی جاپانی انجینئیرز اس ہوٹل میں رہائش پذیر تھے اور اس ہوٹل میں رہنے کی اطلاع پولیس کو پہلے سے دی گئی تھی ، مذکورہ ہوٹل کے پاس غیر ملکی کو ٹھہرانے کا اجازت نامہ بھی موجود ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر