نئے گورنر سندھ کی تعیناتی ، صدر ممنون کی رائے انتہائی اہم ہو گی

نئے گورنر سندھ کی تعیناتی ، صدر ممنون کی رائے انتہائی اہم ہو گی

 کراچی(اسٹاف رپورٹر)گورنرسندھ جسٹس(ر) سعید الزماں صدیقی کے انتقال کے بعد صوبے کے نئے گورنر کی تعیناتی کے لیے وفاق میں اہم مشاورت جاری ہے ۔نئے گورنر سندھ کے لیے نجکاری کمیشن کے چیئرمین محمد زبیر ،مفتاح اسماعیل ،قطب الدین اور مشاہد اللہ سمیت دیگر کے ناموں پر غورہورہا ہے ۔تاہم اس حوالے سے صدر مملکت ممنون حسین کی رائے انتہائی اہم ہوگی ۔ذرائع کے مطابق گورنر سندھ جسٹس (ر)سعیدالزماں صدیقی کے انتقال کے بعد صوبے کے نئے گورنر کے لیے وزیراعظم میاں نواز شریف نے اپنے قریبی ساتھیوں سے مشاورت کا عمل شروع کردیا ہے اور امکان ہے کہ آئندہ دو سے تین روز کے دوران نئے گورنر کے نام کا اعلان کردیا جائے گا ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ جسٹس (ر)سعید الزماں صدیقی کی بطور گورنر نامزدگی میں صدر مملکت ممنون حسین نے اہم کردار ادا کیا تھا اور کراچی سے تعلق رکھنے کے باعث وزیراعظم سندھ کے حوالے سے ان کی رائے کو انتہائی اہم سمجھتے ہیں ۔نئے گورنر سندھ کی تعیناتی کے لیے وزیراعظم صدر مملکت سے بھی مشاورت کریں گے اور صدر ممنون حسین کی جانب سے دیا جانے والا نام گورنر سندھ کے عہدے کے لیے فیورٹ ہوگا ۔ذرائع نے بتایا کہ نئے گورنر سندھ کے لیے وفاق مختلف ناموں پر غور کررہا ہے اور اب تک جن شخصیات کا نام اس عہدے کے لیے سامنے آئے ہیں ان میں نجکاری کمیشن کے چیئرمین محمد زبیر ،سرمایہ کاری بورڈ کے چیئرمین مفتاح اسماعیل ،سینئر سیاستدان قطب الدین ،سابق وفاقی وزیر مشاہد اللہ خان ،سینیٹر نہال ہاشمی اور سابق وفاقی وزیر اطلاعات جاوید جبار شامل ہیں ۔ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت کی خواہش ہے کہ صوبے میں ایسے شخصیت کی بطور گورنر نامزدگی کی جائے جو غیر متنازع ہو اور پیپلزپارٹی اور ایم کیو ایم کے ساتھ امور کو بہتر انداز میں نمٹاسکے ۔سینیٹر مشاہد اللہ خان کے حوالے سے یہ اطلاعات ہیں کہ ماضی میں ان کی وجہ سے سول ملٹری تعلقات میں بگاڑ کی صورت حال پیداہوگئی تھی اس لیے ان کا نام ابتدائی مشاورت کے بعد اس لسٹ سے نکل جائے گا۔ذرائع کے مطابق سی پیک منصوبے کو مدنظر رکھتے ہوئے اس بات پر غور کیا جارہا ہے کہ کسی ایسی شخصیت کو گورنر سندھ نامزد کیا جائے جو سرمایہ کاری اور کاروباری معاملات کے حوالے سے ماہر سمجھے جاتے ہوں ۔اس ضمن میں سرمایہ کاری بورڈ کے چیئرمین مفتاح اسماعیل اور نجکاری کمیشن کے چیئرمین محمد زبیر کا نام سرفہرست ہے ۔ کاروباری حلقوں کی جانب سے مفتاح اسلام کو بطور گورنر پسندیدہ شخصیت قرار دیا جارہا ہے۔کراچی سے تعلق رکھنے والے مسلم لیگی سینیٹر نہال ہاشمی بھی گورنر سندھ بننے کی ریس میں شامل ہیں ۔سینیٹر نہال ہاشمی کو مسلم لیگ (ن) نے پنجاب سے سینیٹر منتخب کروایا تھا اور وہ وفاقی حکومت کی اعلیٰ ترین شخصیت کے کافی قریب سمجھے جاتے ہیں ۔ذرائع نے بتایا کہ اگر نہال ہاشمی کو گورنر سندھ نامزد نہیں کیا جاتا ہے تو انہوں نے اس عہدے کے لیے جاوید جبار کا نام پیش کیا ہے ۔جاوید جبار سابق وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات رہ چکے ہیں اور سماجی کاموں کے حوالے سے بھی ان کی کافی خدمات ہیں ۔ذرائع نے بتایا کہ ان ناموں پر مشاورت کے بعد وزیراعظم میاں نواز شریف آئندہ دو سے تین روز میں نئے گورنر سندھ کی نامزدگی کردیں گے ۔خیال رہے سندھ کے 31 ویں گورنر جسٹس سعید الزماں صدیقی گزشتہ روز طویل علالت کے بعد انتقال کرگئے تھے، انہوں نے 11 نومبر کو گورنر کا منصب سنبھالا تھا، عمر رسیدہ ہونے کے باعث گورنر سندھ کافی بیمار تھے اور وہ دورہ گورنری میں دو بار کئی روز کے لیے اسپتال میں بھی داخل ہوئے تھے۔

مزید : کراچی صفحہ اول