پشاور ،فنی تعلیمی اداروں کی غیر قانونی بند بانٹ کیخلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ

پشاور ،فنی تعلیمی اداروں کی غیر قانونی بند بانٹ کیخلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ

پشاور ( سٹا ف رپورٹر ) محکمہ فنی تعلیم کی تمام یونینز اور ایسوسی ایشنز نے فنی تعلیمی اداروں کی غیر قانونی بندر بانٹ کے خلاف آج جمعرات کے روز جی سی ٹی کوہاٹ روڈ میں مشترکہ گرینڈ جلسہ و احتجاجی مظاہرہ کیا جس سے ٹیکنیکل ٹیچرز اینڈ ایمپلائزایسو سی ایشن ڈپلومہ ہولڈر ،ورلشاپ اسسٹنٹ ، ایپکا ووکشینل انسٹرکٹر ایسوسی ایشن اور خواتین کالجز کی نمائندو ں نے بھرپور شرکت کی جبکہ پیپلز پارٹی کے صوبائی رہنماء مصباح الدین اور ڈسٹرک ممبر ابراھیم خان نے مظاہرین سے خصوصی خطاب کیا اس موقع پر دیگر مقررین ضیا الرحمن ، اظہارالحق ، نصراللہ خان وغیرہ نے خطاب کرتے ہوئے فنی تعلیمی اداروں کو شاھین ووکیشنل سسٹم کے حوالے کرنے کا فیصلہ نہ صرف غیر دانشمندانہ ہے بلکہ یہ اقدام آئین قانون ٹیوٹا ایکٹ اور بنیادی انسانی حقوق کی واضح خلاف ورزی ہے مقررین نے کہا کہ اداروں پر قبضہ کرنے کے لیے بی او ڈی کا غیر قانونی اجلاس طلب کیا گیا ہے جس کے خلاف پشاور ہائی کورٹ سے سوموٹو نوٹس لینے کی اپیل کرتے ہیں مقررین نے الزام لگایا کہ اصل مسلہ غیر ملکی اداروں سے ملنے والے اٹھارہ ارب روپے کو ٹھکانے لگانا ہے جس کے لیے فنی تعلیمی اداروں اور صوبے کے نوجوانوں کا مستقبل داؤ پر لگایا جا رہا ہے مقررین نے واضح کیا کہ وہ ذاتی مفادات سے بالا تر ہو کر اداروں اور طلباء کا مستقبل بچانے کی جنگ لڑیں گے یونین رہنماؤں نے علان کیا کہ آج جمعہ کے روز پشاور ہائی کورٹ کے سامنے پرامن دھرنا دے کر عدالت عالیہ سے اپیل کریں گے کہ وہ بی او ڈی کے غیر قانونی اجلاس سمیت حکومت کے غیر آینی اقدامات روکنے کے لیے سو مو ٹو نوٹس لیں ہم اس ضمن میں فریق بن کر تمام اہم دستاویزات اور اہم شواہد عدالت کے سامنے رکھیں گے پیپلز پارٹی کے رہنماء مصباح الدین اور ڈسٹرکٹ ممبر ابراھیم خان نے یقین دلایا کہ وہ اپنی پارٹی کی سطح پر اپنا تمام اثر رسوخ اور توانائیاں بروئے کار لا کر اساتزہ کی تحریک کو کامیابی سے ہمکنار کریں گے اور اداروں کی بقا کے لیئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے

مزید : پشاورصفحہ آخر