ڈی سی بونیر کا عوامی شکایات پر ڈگر ہسپتال کا دورہ

ڈی سی بونیر کا عوامی شکایات پر ڈگر ہسپتال کا دورہ

بونیر (ڈسٹرکٹ رپورٹر )ڈپٹی کمشنر بونیر ظریف لمعانی نے عوامی شکایت پر ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال ڈگر کا دورہ کیا ،انہوں نے ہسپتال کے مختلف وارڈز کا معائنہ کیا ،صفائی کی صورت حال دیکھی ۔ہسپتال میں ڈاکٹرز سمیت دیگر عملہ کی کارکردگی اور حاضری چیک کئے ،ڈی سی بونیر مریضوں اور انکے لواحقین سے ملے ،اور انکی خیریت دریافت کی ۔مریضوں سے ہسپتال کے عملہ اور ان کو دی جانے والی صورت حال کے بارے میں بات چیت کی ،انکے ہمراہ اے اے سی ڈگر ڈاکٹر عظمت وزیر ،ایم ایس ڈگر ہسپتال بھی تھے ۔دورے کے بعد مقامی میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے ڈی سی بونیر نے کہا کہ ہیڈ کوارٹر ہسپتال ڈگر میں صفائی کی صورت حال انتہائی خراب ہے ،ہسپتال میں ایکسرے مشین کام نہیں کررہاہے ۔ائی سی یو وارڈ میں وہ سہولیات مریضوں کو میسر نہیں جو ہونے چاہیں ۔ڈی سی بونیر نے کہا کہ میرے دورے کا مقصد ہسپتال میں مریضوں کو درپیش مشکلات سے اپنے اپ کو اگاہ کرنا تھا ۔ہسپتال کے دورے کا میں نے ایم ایس کو بتایا تھا مگر جب میں اگلی دفعہ ہسپتال کا دورہ کروں گا ،تو سرکاری گاڑی کی بجائے ایک مریض کی روپ میں کروں گا ،انہوں نے ہسپتال میں پارکنگ کی صورت حال پر شدید برہمی کا اظہار کیا اور کہا کہ ہسپتال کے پارکنگ میں صرف ڈاکٹرز اور عملہ کی گاڑی ہونی چاہئے ،ایم ایس ڈگر ہسپتا ل ڈاکٹر شیر محمد نے ڈی سی بونیر کو بتایا کہ انکے چارج لینے کے بعد جو اقدامات کئے ہیں اسکے حوصلہ افزا نتائج سامنے ارہے ہیں ۔ڈی سی بونیر نے کہا کہ ہسپتال میں مزید بہتری کی گنجائش موجود ہے ۔صوبائی حکومت کی واضح پالیسی ہے کہ ڈی ایچ کیو سمیت تمام ہسپتالوں میں مریضوں کو بہتر سہولیات دی جائے ۔صوبائی حکومت تعلیم اور صحت پر خصوصی توجہ دے رہی ہیں ۔اس موقع پر ہسپتال میں داخل مریضوں کے ساتھ ائے ہو ئے لواحقین نے میڈیاکو بتایا کہ ہیڈ کوارٹر ہسپتال ڈگر برائے نام ہے ۔ہسپتال میں پانی کی شدید قلت ہے ۔زچہ بچہ وارڈ میں نائٹ ڈیوٹی کے دوران فی میل ڈاکٹرز تو دور کی بات نرسز بھی موجود نہیں ہوتی ،انہوں نے کہا کہ گذشتہ رات زچہ بچہ وارڈ میں انکلیو بیٹرز مشین کو بجلی جانے اور متبادل سسٹم نہ وہونے کہ وجہ سے دو بچے ہاتھ سے جان دھو بھیٹے جبکہ میل وارڈ میں ڈاکٹرز کی عدم دلچسپی اوردیر سے انے کی وجہ سے چار افراد جان بحق ہو گئے تھے ،انہوں نے کہا کہ ڈی سی بونیر کے دورہ سے قبل ہسپتال کی صفائی کی گئی تھی مگر اس سے قبل ہسپتال میں صفائی کا ناقص صورت حال تھا ۔لواحقین نے کہا کہ مریض کو ہسپتال میں صرف بیڈ میسر ہے باقی ہر چیز باہر سے لانی پڑتی ہے ،ہسپتال کے ایکسرے مشین ،لیبارٹری کو ئی چیز کام نہیں کررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ صورت ھال سے تنگ اکر عوام اپنے مریض کو سرکاری ہسپتال میں داخل کرنے کی بجائے پرائیویٹ میڈیکل سنٹرز میں داخل کراتے ہیں ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر