یورپی ملک میں معروف ترین ماڈل کے ساتھ وہ خوفناک کام ہو گیا جو پاکستان میں کسی لڑکی کے ساتھ ہوتا ہے تو دنیا میں ہنگامہ برپا ہو جاتا ہے، فلموں پر فلمیں بنائی جاتی ہیں

یورپی ملک میں معروف ترین ماڈل کے ساتھ وہ خوفناک کام ہو گیا جو پاکستان میں کسی ...
 یورپی ملک میں معروف ترین ماڈل کے ساتھ وہ خوفناک کام ہو گیا جو پاکستان میں کسی لڑکی کے ساتھ ہوتا ہے تو دنیا میں ہنگامہ برپا ہو جاتا ہے، فلموں پر فلمیں بنائی جاتی ہیں

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

روم ( نیوز ڈیسک ) نام نہاد غیرت کے نام پر خواتین کو ظلم کا نشانہ بنانے والے درندے ہر جگہ پائے جاتے ہیں لیکن جہاں ایک جانب اہل مغرب ہمیں ان جرائم کے نام پر بدنام کرنے کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیتے وہیں ہمارے کچھ اپنے بھی ان جرائم کو دنیا میں ہماری پہچان بنانے پر تلے ہیں۔ حقیت یہ ہے کہ نام نہاد ترقی یافتہ معاشروں میں بھی یہ بربریت پائی جاتی ہے، جس کی ایک مثال اٹلی کی مشہور ماڈل ، گلوکارہ اور مس اٹلی مقابلہ حسن کی سابقہ اُمیدوار جیسیکا نوتارو کے ساتھ ہونے والا لرزہ خیز سلوک ہے، جس کے باعث بیچاری عمر بھر کیلئے بصارت سے محرومی کے خطرے سے دو چار ہو گئی ہیں۔

ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق 28 سالہ جیسیکا اور ان پر تیزاب پھینکنے والا 29 سالہ ملزم جارج ایڈسن چند سال قبل ڈولفن مچھلیوں کے ایک ایکویریم پر اکٹھے ملازمت کرتے تھے جہاں ان کے درمیان دوستی کا تعلق پیدا ہو گیا۔ بعد ازاں جیسیکا نے جارج سے قطع تعلق کر لیا جس کا اسے شدید رنج تھا۔ وہ اکثر و بیشتر جیسیکا کا تعاقب کرتا رہتا تھا اور اسے پریشان کئے رکھتا تھا۔ گزشتہ سال نومبر میں جیسیکا نے اس کے خلاف پولیس کو اطلاع کر دی اور عدالت کی جانب سے اسے حکم دیا گیا کہ وہ جیسیکا کو تنگ کرنے سے بعض آجائے اور اس کے قریب بھی نہ جائے۔ اس بات پر وہ مزید مشتعل ہو گیا اور جیسیکا سے بدلہ لینے کیلئے موقعے کی تلاش میں رہنے لگا۔ پھر ایک دن اس نے جیسیکا کو تنہا پا کر ایسی درندگی کا مظاہر ہ کر دیا کہ جس کی مثالیں مغربی معاشرے میں کم ہی ملتی ہیں۔ اس نے تیزاب سے بھری بوتل جیسیکا کے منہ پر اُنڈیل دی جس کی وجہ سے اس کی آنکھوں کو شدید نقصان پہنچا جبکہ چہرے کی جلد بھی بری طرح متاثر ہوئی۔ ان کے کے بازو، ٹانگیں اور کولہے بھی جھلس گئے۔ انہیں فوری طور پر روماگنہ کے علاقے میں واقع سیسنا ہسپتال لیجایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے ان کی جھلسی ہوئی جلد کی مرہم پٹی شروع کر دی۔ اگرچہ ان کی آنکھوں کا علاج کیا جا رہا ہے لیکن شدید نقصان پہنچنے کی وجہ سے خدشہ ہے کہ وہ بصارت سے ہمیشہ کیلئے محروم ہو سکتی ہیں۔

ایک ہنسی مسکراتی لڑکی کی زندگی آن واحد میں برباد کر دینے والے درندے کو پولیس نے گرفتار کر لیا ہے اور اس کے خلاف قانونی کارروائی کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ جیسیکا کے ساتھ ہونے والے ظلم کے بارے میں بات کرتے ہوئے اس کی ایک سہیلی نے اخبار لاریپبلیکاکو بتایا، ”جیسیکا میری بہت پیاری دوست ہے۔ اس نے مس روماگنہ کا اعزاز حاصل کیا اور 2007 ءمیں مس اٹلی کے مقابلے میں بھی حصہ لیا۔ وہ بہت اچھی گلوکارہ اور ڈانسر بھی تھی۔ اس واقعے نے جیسیکا کی بوڑھی والدہ کو صدمے سے بے حال کر دیا ہے اور ہم سب بھی بے حد غم زدہ ہیں۔ اس کا مسکراتا ہوا چہرہ ہر وقت میری آنکھوں کے سامنے رہتا ہے۔ میرے لیے یہ تصور بہت بھیانک ہے کہ اب میں شائد کبھی اسے پہلے کی طرح مسکراتا ہوا نہیں دیکھ پاﺅں گی ۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس