چوکیداری کا کام کرنے والا شخص اچانک بڑے ملک کا بادشاہ بن گیا، مگر کیسے ؟ جان کر ہر کوئی حیرت میں ڈوب جائے

چوکیداری کا کام کرنے والا شخص اچانک بڑے ملک کا بادشاہ بن گیا، مگر کیسے ؟ جان ...
 چوکیداری کا کام کرنے والا شخص اچانک بڑے ملک کا بادشاہ بن گیا، مگر کیسے ؟ جان کر ہر کوئی حیرت میں ڈوب جائے

  

لندن ( نیوز ڈیسک) برطانیہ کے شہر مانچسٹر میں کرائے کے فلیٹ میں رہائش پذیر 54 سالہ چوکیدار عمانویل بوشائجہ کو دیکھ کر شائد آپ سوچیں گے کہ بیچارہ کوئی افریقی پناہ گزین ہے جو برطانیہ آکر چند پیسے کمانے کی کوشش کر رہا ہے ، لیکن زرا ٹھہریئے، یہ صاحب کوئی عام آدمی نہیں بلکہ افریقی ملک روانڈا کے نئے بادشاہ سلامت ”کنگ یوہی ششم“ ہیں۔

ڈیلی میل کی رپوٹ کے مطابق روانڈا کے صدر کنگ کیگالی پنجم 80 سال کی عمر میں دنیا سے رخصت ہو گئے ہیں اور ان کے بعد عمانویل بوشائجہ کو بادشاہ بنا دیا گیا ہے۔ دراصل کنگ کیگالی پنجم کی کوئی اولاد نہ تھی لہٰذا وہ جاتے جاتے برطانیہ میں مقیم اپنے بھانجے عمانویل کو بادشاہی سونپ گئے ہیں۔

روانڈا کی رائل کونسل آف آبیرو کے ایک بیان کے مطابق عمانویل بوشائجہ کو 1961 ءمیں ان کے والدین کے ساتھ اس وقت ملک چھوڑنا پڑ گیا تھا جب ایک ریفرنڈم کے بعد روانڈا سے بادشاہی نظام عملاً ختم ہو گیا۔ وہ روانڈا چھوڑنے کے بعدیوگنڈا چلے گئے اور وہاں پیپسی کولا میں ایک معمولی ملازمت کرتے رہے۔ 16 سال قبل وہ برطانیہ چلے گئے اور وہاں چوکیداری کی ملازمت اختیار کر لی۔

ان کے بادشاہ ماموں کنگ کیگالی نے بھی عمر کا زیادہ تر حصہ امریکہ میں گزارا اور جب ان کی موت ہوئی تو وہ امریکہ میں ہی پناہ گزین تھے۔ یہ بادشاہ سلامت بیروز گار تھے اور امریکی حکومت کی امداد پر گزر بسر کرتے تھے۔

کنگ کیگالی کی غربت کے عالم میں موت ہو جانے کے بعد کنگڈم آف روانڈا کی رائل کونسل نے اعلان کیا کہ اب ان کے بھانجے عمانویل بادشاہ ہونگے، اور انہیں نئے بادشاہ کا رسمی خطاب بھی دے دیا گیا ہے۔

کنگ کیگالی اپنے ملک لوٹنے کی حسرت لیے ہوئے دنیا سے رخصت ہوئے۔ وہ روانڈا جانے کا خواب دیکھتے رہ گئے مگر وہاں برسر اقتدار صدر کاگامی نے ان کی واپسی کبھی ممکن نہ ہونے دی۔ صدر کاگامی 1994 سے اقتدار میں ہیں اور 2015 میں قوانین میں تبدیلی کرتے ہوئے تیسری بار صدر منتخب ہو چکے ہیں۔ خدشہ ہے کہ نئے بادشاہ سلامت کنگ یوہی ششم بھی اپنی مملکت پردیس میں بیٹھ کر چلائیں گئے ۔

مزید : ڈیلی بائیٹس