گڈ گورننس کے دعوے کرنے والے کہاں سوئے رہے،بہاﺅ الدین ذکریا یونیورسٹی کیس میں جسٹس مظاہر نقوی کے ریمارکس

گڈ گورننس کے دعوے کرنے والے کہاں سوئے رہے،بہاﺅ الدین ذکریا یونیورسٹی کیس ...
گڈ گورننس کے دعوے کرنے والے کہاں سوئے رہے،بہاﺅ الدین ذکریا یونیورسٹی کیس میں جسٹس مظاہر نقوی کے ریمارکس

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس سیدمظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں قائم تین رکنی بنچ نے بہاﺅالدین زکریا یونیورسٹی لاہور کیمپس کی بندش کے لئے دائر درخواست پرلاہور کیمپس میں زیر تعلیم تمام طالب علموںکی انرولمنٹ کرنے کا حکم دیتے ہوئے ریکارڈ عدالت میں طلب کر لیا، جبکہ وزر اعلی پنجاب کی سربراہی میں لاہور کیمپس کی منظوری کے حوالے سے ہونے والے اجلاس کا ریکارڈ بھی عدالت میں پیش کرنے کا حکم دے دیا ہے ۔

درخواست گزار میاں حنیف طاہر ایڈووکیٹ نے کہا کہ طالب علموںکے مستبقل سے کھیلنے کی بناءپر بی زیڈ یو لاہور کیمپس کو مستقل بند کرنے کا حکم دیا جائے۔عدالتی حکم پرسیکرٹری ہائرایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نسیم نواز نے لاہور کیمپس کی منظوری کے حوالے سے بنائی گئی سمری عدالت میں پیش کر دی۔چیئرمین ہائر ایجوکیشن کمیشن نے عدالت کو بتایا کہ بی زیڈ یو لاہور کیمپس کے قیام کے لئے ایچ ای سی سے کوئی این او حاصل نہیں کیا گیا،انہوں نے کہا کہ لاہورکیمپس میں طالبعلموں کی انرولمنٹ کر کے ہی انہیں مائیگریٹ کیا جا سکتا ہے ،ایچ ای سی اس حوالے سے ہر طرح کی معاونت اورفنڈز جاری کرنے کو تیار ہے،عدالت نے ریمارکس دیئے کہ طالب علموںکے مستقبل کا ہر صورت تحفظ کیا جائے گا،اتنا بڑا سکینڈل ہونے کے باوجود گڈ گورننس کے دعوے کرنے والے کہاں سوئے رہے۔عدالت نے لاہور کیمپس میں زیر تعلیم تمام طالبعلموں کی انرولمنٹ کرنے اور ملتان کیمپس سے لاہور مائیگریشن کے خواہش مند طالب علموںکا ریکارڈ عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے کیس کی مزید سماعت 17فروری تک ملتوی کر دی۔

مزید : لاہور