نوازشریف قاتلوں کی گرفتاری کیلئے اختیارات استعمال کریں: والد زینب

نوازشریف قاتلوں کی گرفتاری کیلئے اختیارات استعمال کریں: والد زینب
نوازشریف قاتلوں کی گرفتاری کیلئے اختیارات استعمال کریں: والد زینب

قصور (ویب ڈیسک) قصور میں نامعلوم ملزمان کے ہاتھوں قتل کی جانے والی معصوم پری زینب کے والد محمد امین انصاری نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف تعزیت کے لئے میرے گھر آئے تو انہوں نے یقین دہانی کرائی تھی کہ پولیس اور حکومت ان سے رابطہ میں رہیں گے مگر گزشتہ تین روز سے نہ تو کوئی ملزم گرفتار ہوا ہے اور نہ ہی انتظامیہ یا حکومت کی طرف سے کوئی رابطہ کیا گیا ہے۔

میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے پریشان حال محمد امین انصاری نے کہا کہ جے آئی ٹی کے سربراہ کی تبدیلی خوش آئند ہے۔ سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کی طرف سے تعزیت کے لئے آنے کے سلسلہ میں مَیں نے کوئی بات نہیں کی، میں صرف یہ گزارش کرنا چاہتا ہوں کہ سابق وزیراعظم حکمران جماعت کے سربراہ ہونے کی حیثیت سے معصوم زینب اور دیگر شہید ہونے والی بچیوں کے قاتلوں کی گرفتاری کے لئے اپنے اختیارات کا استعمال کریں۔ ننھی مقتولہ زینب کے والد محمد امین نے کہا ہے کہ ابھی تک کوئی ملزم گرفتار نہیں ہوسکا، پولیس یا انتظامیہ رابطہ میں نہیں ہے، بچی کی میڈیکل رپورٹ بھی نہیں دی گئی، نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ سے پانچ سات منٹ بات ہوئی، انہوں نے ملزم کی گرفتاری کی یقین دہانی کرائی، آرمی کی ٹیم تحقیقات کررہی ہے۔

امید ہے کہ اس ٹیم کی تحقیقات نتیجہ خیز ہوں گی، مطالبہ کرتا ہوں کہ قاتل کو پکڑکرچوک میں سرعام لٹکایا جائے اور یہی مطالبہ پوری قوم کررہی ہے، حکومتی سطح پر کچھ ہوتا نظر آرہا ہے، علی محمد خان مجھ سے تعزیت کیلئے آئے، کراچی تک سے وہ لوگ تعزیت کرنے آئے جنہیں جانتا تک نہیں، قصور میں لوگ اپنے بچوں بچیوں کی سکیورٹی کے حوالے سے پریشان ہیں، انتظامیہ سے مطالبہ ہے کہ ایسے سکیورٹی اقدامات کرے جس سے لوگ مطمئن ہوں اور بلا خوف و خطر بچوں کو سکول بھیج سکیں۔

مزید : علاقائی /پنجاب /قصور

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...