پاکستانی بچوں میں غذائی قلت دور کرنے کیلئے ’ملک فرسٹ‘پروگرام شروع ،شرکت کا موقع، اندرون سندھ سے آغاز کردیا

کراچی (پروموشل ریلیز)ہم اپنے بچوں بہترین پرورش اور نشوونما کے لیے ہر حد تک جانے کو تیار ہوتے ہیں اور فاقے برداشت کرنے سمیت ہر قربانی دے سکتے ہیں۔ماں باپ کے لیے اس سے بڑھ کر اندوہناک صورتحال کوئی اور نہیں ہوتی کہ وہ اپنے بچے کو مناسب غذا فراہم نہ کر سکیں۔

آج پاکستان میں 44فیصد بچوں کی نشوونما ٹھیک نہیں ہو پا رہی اور ہمارے ملک کو اس وقت ناقص غذائیت کے حوالے سے سنگین ہنگامی صورتحال درپیش ہے۔غذائیت کا بحران نمو پاتے بچوں کو طاعون کی طرح اپنی لپیٹ میں لے چکا ہے اور ہر گزرتے دن کے ساتھ سنگین تر ہوتا جا رہا ہے۔شکر گنج فوڈز کو اس سنگین صورتحال کا ادراک ہے چنانچہ اس نے ’مِلک فرسٹ‘(MilkFirst)نام سے پروگرام شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے جو اس صورتحال پر قابو پانے میں پہلا قدم ثابت ہو گا۔


پروگرام ’مِلک فرسٹ‘ کا مقصد پاکستان کے بچوں کی زندگیوں کو بہتر اور آئندہ نسلوں کو محفوظ بناناہے۔یہ پروگرام پاکستان کے دورافتادہ علاقوں کے بچوں تک پہنچنے اور انہیں غذائیت فراہم کرنے کے لیے شروع کیا گیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اس کا آغاز اندرونِ سندھ سے کیا گیا ہے جہاں5سال تک کی عمر کے 60فیصد سے زائد بچے شدید غذائی قلت کا شکار ہیں۔ تھرپارکر میں لگ بھگ 1700خاندانوں کو ان کے بچوں کے لیے ’گڈ مِلک‘ فراہم کیا گیا، جہاں سے اس پروگرام کا آغاز ہوا۔


’مِلک فرسٹ‘ کی ٹیم پربہت جلد ملک کے دیگر دورافتادہ علاقوں تک پہنچنے اور اس پروگرام کو قومی سطح تک پھیلانے کے لیے بہت پرامید ہے تاکہ ملک سے ناقص غذائیت کے شکار ایک ایک بچے کو مناسب غذا پہنچائی جا سکے۔شکر گنج فوڈز نے اس پروگرام کی ترویج کے لیے ایک ڈیجیٹل فلم بھی بنائی ہے اور امید ہے کہ اس کے ذریعے زیادہ سے زیادہ لوگوں کو آگے آنے اور اس پروگرام کے مقصد میں شامل ہونے کی ترغیب ملے گی۔


آپ بھی اس پروگرام کا حصہ بن سکتے ہیں، ابھی ’گڈمِلک‘ کا ایک پیک خریدیئے اور اپنے قرب و جوار میں موجود نشوونما پاتے کم عمر بچوں میں تقسیم کیجیے۔ ٹیم گڈ مِلک بھلائی کو پھیلانے کے لیے سرگرداں ہے، اس کی مدد کیجیے۔

مزید : انسانی حقوق /بزنس /علاقائی /سندھ /کراچی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...