حکو مت اغواء شدہ کول مائن کے مزدوروں کی رہا ئی کے لئے فوری اقدا مات کرے

حکو مت اغواء شدہ کول مائن کے مزدوروں کی رہا ئی کے لئے فوری اقدا مات کرے

پبی (نما ئندہ پاکستان)حکو مت اغواء شدہ کول مائن کے مزدوروں کی رہا ئی کے لئے فوری اقدا مات کرے ستمبر2011 میں 16 اغواء شدہ مزدوروں کا تا حال کو ئی پتہ نہیں چلا کہ وہ زندہ یا مردہ حکو مت پا کستان بھر میں کو ل مائن کے لیبر کو تحفظ فرا ہم کریں مائینگ سیکٹر پا کستان میں کام کر نے مہلک حادثات کی انکوا ئری رپورٹ کو منظر عام پر لا جا ئے اور حادثات کی وجو ہات کا تعین کیا جا ئے ان خیا لات کا اظہار نور اللہ خان جنرل سیکر ٹری چراٹ کو ل ما ئینر لیبر یو نین ،آرگنا ئزر آزاد قبا ئلی علا قہ جات خیبر پختو نخوا نور اسلام سیکر ٹری اطلا عات ،نشر یات مائن ورکزفیڈریشن سمیت دیگر عہدیداروں نے پبی پر یس کلب کے سا منے احتجا جی مظا ہرہ اور پبی سٹیشن سے پبی بازار تک جلوس سے خطاب کر تے ہو ئے کیا کول مائن مزدوروں نے بینرز اٹھا ئے تھے جس پر ان کے مطالبات درج کئے تھے جلوس میں حمید اللہ جنرل سیکر ٹری درہ آدم خیل کول مائنیز لیبر یو نین بہادر خان ڈپٹی جنرل سیکر ٹری آدم خیل کول ما نینئر لیبر یو نین درہ آدم خیل سمیت دیگر قا ئدین بھی ساتھ تھے نور اللہ خان جنرل سیکر ٹری چراٹ کو ل ما ئینر لیبر یو نین ،آرگنا ئزر آزاد قبا ئلی علا قہ جات خیبر پختو نخوا نور اسلام سیکر ٹری اطلا عات ،نشر یات مائن ورکزفیڈریشن پا کستان ما ئینگ سیکٹر میں کام کر نے والے کا نکنوں اور کار کنوں کو ای او بی آئی میں فوری رجسٹرڈ کیا جا ئے کیو نکہ اس وقت ای او بی آئی میں کا نکنوں اور کار کنوں کو 5 فیصد بھی رجسٹرڈ نہیں کیا گیا مائینگ سیکٹر پا کستان میں مہلک حاد ثات کی انکوائری رپورٹ کو منظر عام پر لا یا جا ئے اور ان حا دثا ت کی وجو ہات کا تعین کیا جا ئے ان حا د ثات کی روج تھام کے لئے سہہ فر یقی بورڈ فوری تشکیل دیا جا ئے اور بورڈ کی شفایت پر عمل در آمد کر تے ہو ئے مہلک حاد ثات کی روک تھام کی جا ئے تا کہ قیمتی انسا نی جا نوں کے ضیاع کو روکا جا ئے کو ئلے کی بر آمد کو بیرو ن ملک سے فوری طور پر روکا جا ئے اور ملکی کو ئلے کو ذیادہ سے زیادہ ملک کی انڈسٹری میں استعمال کیا جا ئے اور یہاں پر کول ما ئینز سیکٹر بند ہیں ان کو بھی چا لو کیا جا ئیتا کہ ملک عزیز میں بے روز گار ی پر قا بو پا یا جا ئے اور ملکی زر مبا دلہ جو کثیر تعداد میں غیر ملکوں کو فرا ہم کیا جا تا ہے اس کو ملکی تعمیر وتر قی پر خرچ کیا جا ئے انہوں نے کہا کہ 29 ستمبر2011 کو کام لہ خیل کول مائن سے اسلحہ کے نوک 34 مزدوروں کو اغواء کیا گیا تھا جس میں 18 کو رہا کیا گیا اور 16 مزدور تاحال لا پتہ ہے حکو مت ابؤن کی باز یا بی کے ہنگا می بنیادوں پر اقدا مات کریں

مزید : پشاورصفحہ آخر