چنگ چی رکشے کے غیر قانونی سٹینڈ عوام کیلئے وبال جان

چنگ چی رکشے کے غیر قانونی سٹینڈ عوام کیلئے وبال جان

پشاور(سٹی رپورٹر) شہر میں چنگ چی رکشوں کے غیر قانونی سٹینڈ ٹریفک میں خلل اور شہریوں کیلئے وبال جان بن کر رہ گئے ،بااثر شخصیات انتظامی کاروائیوں میں رکاوٹ بنے ہوئے ہیں، رکشہ ڈرائیوروں نے غیر قانونی اڈے بنا رکھے ہیں شہرکے اہم چوک چوراہوں سمیت دیگر بازاروں میں جہاں تجاوزات کی بھرمار ہے وہیں غیر قانونی اڈوں نے شہر کا حسن بگاڑ کر رکھ دیا ہے ،غیر قانونی رکشہ اسٹینڈز ٹریفک کے بہا میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے ، جہاں آئے روز ٹریفک جام رہنا معمول بن چکا ہے جبکہ حادثات کی شرح میں بھی تیزی سے اضافہ ہو رہا ہیمختلف ادوار میں انتظامیہ کی طرف سے مختلف اصلاحات کے ساتھ ساتھ کریک ڈاون کے بھی اعلانات کروائے جاتے رہے مگر عملی صورتحال بہتر ہونے کی بجائے مزید گھمبیر ہو تی جا رہی ہیصوبائی دارالحکومت پشاور میں موٹر سائیکل ،رکشوں کے شور، دھویں سے شہریوں کی زندگیاں اجیرن ہوگئیں،جبکہ کم عمر چنگ چی رکشہ ڈرائیور بغیر روٹ پرمٹ اور بغیر لائسنس کے خطرناک طریقے سے رکشہ ڈرائیونگ کرتے ہوئے نظر آتے ہیں اور حادثات کے باعث انسانی زندگیوں کا ضیاع ہورہا ہے، شہر کے اندرونی علاقوں موٹر سائیکلیں ،آٹو رکشہ ،چنگ چی رکشہ کے کھڑے ہونے سے ٹریفک جام رہتی ہے بازاروں میں خریداری کے لیے آنے والی خواتین کو بھی پریشانی کا سامنا کرنا پڑتاہے ،رکشوں کے شور و دھوئیں سے شہری بہرے پن ،دمے ،ٹی بی کے مرض اور آنکھوں کی بیماریوں کا شکار ہورہے ہیں اس حوالے سے ان مخصوص جگہوں پر ڈیوٹیاں کرنے والے ٹریفک پولیس کے اہلکار بھی ڈیوٹی سے غیر حاضر رہتے ہیں شہریوں نے اعلے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ضلع بھر میں چلنے والے غیر قانونی رکشوں کیخلاف کریک ڈان کیے جانے کے احکامات جاری کیے جائیں جبکہ غفلت کے مرتکب ٹریفک پولیس کے افسران و اہلکاروں کیخلاف سخت محکمانہ کارروائی عمل میں لائی جائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر