پلاٹ فراہم کرنے کی یقین دہانی، ایل ڈی اے سٹی کیس نمٹا دیاگیا

پلاٹ فراہم کرنے کی یقین دہانی، ایل ڈی اے سٹی کیس نمٹا دیاگیا

لاہور(نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس پاکستان مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار اور مسٹر جسٹس اعجازالاحسن پر مشتمل بنچ نے صوبائی وزیر ہاؤسنگ میاں محمودالرشید کی طرف سے ایل ڈی اے سٹی متاثرین کو فیزون بنا کر جگہ فراہم کرنے کی یقین دہانی کے بعد ایل ڈی اے سٹی ازخود نوٹس کیس نمٹا دیا ۔ عدالت نے پلاٹوں کی تقسیم کی کمیٹی میں نیب کے افسروں کو شامل کرنے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نیب کا اس کمیٹی میں کیا کام ہے ، میاں محمود الرشید نے عدالت میں پیش ہو کر بتایا کہ ہمارے پاس 13 ہزار کنال زمین موجود ہے جس پر فیز ون بنا کر متاثرین کو دیں گے ، چیف جسٹس نے پلاٹوں کی تقسیم کی کمیٹی مین نیب افسران جو شامل کرنے پر اظہار برہمی کرتے ہوئے استفسار کیا نیب کا اس کمیٹی میں کیا کام ؟نیب کی تلوار کیوں لوگوں کے سر پر لٹکا دی ہے ؟ ،وزیرہاؤسنگ نے کہا ایڈن سوسائٹی کے متاثرین خوار ہورہے ہیں،جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ ایڈن سوسائٹی کا کیس تو حل ہوچکا ،وزیر ہاؤسنگ نے کہا کہ ڈاکٹر امجد والا کیس ابھی تک حل نہیں ہوا وہ باہر چلے گئے ہیں ،چیف جسٹس نے کہاایل ڈی اے سٹی میں لوگ پیسے دیکر بیٹھے ہیں لیکن انہیں زمین نہیں ملی ،کسی کے ساتھ ظلم نہیں ہونے دیں گے ،وزیر ہاؤسنگ نے رپورٹ پیش کی کہ9ہزار افراد کے پاس زمین کی فائلیں موجود ہیں لیکن زمین موجود نہیں ،98ہزار کنال زمین کا قبضہ ابھی واہ گزار کروانا ہے،ساڑھے 13ہزار کنال زمین کی تقسیم کی پلاننگ کرلی ہے ،کیس کی سماعت کے بعد وزیرہاؤسنگ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ایل ڈی اے سٹی میں جو ہمارے ڈویلپرز تھے وہ زمین واپس کریں گے اورایل ڈی سٹی کے 9ہزار لوگوں کوپلاٹ مل جائیں گے، متاثرین نے زمینیں فروخت کرنے سے انکار کردیا ہے،ایل ڈی اے کسی سے زبردستی زمین نہیں لے رہا۔

ایل ڈی اے سٹی کیس

مزید : صفحہ آخر