آنے والے دنوں میں عمران خان بھی اپوزیشن کے ساتھ کھڑے ہونگے،جاوید ہاشمی

آنے والے دنوں میں عمران خان بھی اپوزیشن کے ساتھ کھڑے ہونگے،جاوید ہاشمی

ملتان (اے این این )مسلم لیگ ن کے رہنما سینر سیاست دان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ سیاسی پارٹیاں ختم کرنا کسی کے بس کی بات نہیں پارٹیوں کو توڑنے کے لئے آئیں کو لپٹنا پڑے گا ،مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی کی قربتیں بھی بڑھیں گی اور ان کو اکھٹا بھی ہونا پڑے گا ۔ملتان میں اپنی رہائش گاہ پر پریس کانفرس کرتے ہوئے مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ آنے والے دنوں میں عمران خان بھی اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ کھڑا ہو گا۔ انہوں نے مذید کہا کہ میں اصغر خان کیس کو مرنے نہیں دونگا بلکہ اس کیس کا مدعی خود بنوں گا تاکہ حقائق قوم کے سامنے لائے جائیں۔ ،مخدوم جاوید ہاشمی کا کہنا تھا کہ کوٹ لکھپت جیل میں نواز شریف کے ساتھ ہو رہی ہے وہ کسی عام قیدی کے ساتھ بھی نہیں ہوتی اگر کوئی بیمار ہو تو اسے بھی سہولتیں دی جاتی ہیں لیکن تین بار ملک کے وزیر اعثم اور دو بار پنجاب کے وزیر اعلیٰ رہنے والے کو ڈاکٹر کی سہولت نہیں دی جا رہی نواز شریف نے اسٹیبلشمنٹ کے خلاف جنگ لڑی ہے اور تین بار اپنی وزرات عثمی کو قربان کیا ہے نواز شریف کی آواز مضبوط آواز ہے اور ان سے انتقام لیا جا رہا ہے میں نواز شریف کے ساتھ کھڑا ہوں ۔انہوں نے مذید کہا کہ نواز شریف رہائی کمیٹی بنانے کے لئے دوستوں سے مشاورت کر رہا ہوں ،جاوید ہاشمی نے کہا کہ اصغر خان کیس ملک کے منظر نامے پر چھایا ہوا ہے میں اس کیس کو مرنے نہیں دوں گا میں اس کیس کی پیروی کرونگا تاکہ قوم کو پتہ چلے کہ 14،15 کروڑ کہاں گئے کیونکہ اس میں سیاست دانوں کو بدنام کیا جا رہا ہے سیاست دان اپنا کیرئیر بنانے کے لئے ساری زندگی جدوجہد کرتا ہے لیکن جھوٹ بول کر اس کی کردار کشی کی جاتی ہے چیف جسٹس کو یہ حق نہیں پہنچتا کہ وہ اس کیس کو ختم کریں اس کیس میں جنرل درانی اور جنرل اسلم بیگ کے اعترافی بیان موجود ہیں انہیں پکڑیں وہ سب کچھ بتا دیں گے ،انہوں نے کہا کہ سول حکومتوں کو ستعمال کیا جاتا ہے اور پھر انہیں اٹھا کر باہر پھینک دیا جاتا ہے عمران خان کا دور ختم ہونے والا ہے انتظامیہ فیصلے نہیں کر پا رہی کوئی عمران خان کی حکومت کو نہیں گرنا چاہتا بلکہ سب اس کو سپورٹ کر رہے ہیں لیکن یہ خود اپنے کاموں کی وجہ سے ختم ہو جائے گی جہاں وزیراعظم دورے پر جاتے ہیں وہیں کمانڈر انچیف بھیدورے پر چلے جاتے ہیں ۔

مزید : صفحہ اول