انتظامیہ کی غفت ‘ نیشنل پارک میں مادہ گینڈا ہلاک پوسٹمارٹم کے بعد اہم انکشافات متوقع‘لوگ افسردہ

انتظامیہ کی غفت ‘ نیشنل پارک میں مادہ گینڈا ہلاک پوسٹمارٹم کے بعد اہم ...

ڈیرہ بکھا (نمائندہ پاکستان )نیپال سے سابق صدرجنرل ضیاء الحق کے دور میں نیشنل پارک لال سوہا نرا کوتحفے میں دیئے جانے والے (بقیہ نمبر33صفحہ12پر )

دوگینڈے نراو ر ما دہ محکمہ کے عملہ کی غفلت کے نتیجہ میں مادہ گینڈہ ہلاک ہوگئی جس کا پوسٹمارٹم ہوا،پتہ چلا ہے کہ مادہ گینڈہ جوکہ حاملہ تھی اس دوران اس کا خون جاری ہوامحکمہ کے عملہ نے اس پر کوئی توجہ نہ دی جو آج عملہ کی غفلت اورلاپرواہی کے نتیجہ میں ہلاک ہوگئی ہے اطلاع ملنے پر وائلڈ لائف کی ٹیمیں موقع پر پہنچ گئی ہیں اور ڈاکٹر اس کا پوسٹمارٹم کر رہے ہیں ،اہم انکشافات متوقع ہیں۔ لال سوہانرا نیشنل پارک میں شاہ نیپال کی جانب سے دیے گئے گینڈوں کا جوڑہ عرصہ دراز سے شائقین کی توجہ کا مرکز بنا ہوا تھا ملک بھر سے لوگ خصوصاً بچے گینڈے دیکھنے کے لیے لال سوہانرا نیشنل پارک کا رخ کرتے تھے لیکن مادہ گینڈا بیماری کے باعث مر گیا ‘ محکمہ جنگلات کے ملازمین کے مطابق گینڈوں کی یہ جوڑی شاہ نیپال نے پاکستان کو تحفہ کے طور پر دی تھی جس وقت ان کو نیشنل پارک لال سوہانرا لایا گیا اس وقت یہ چھوٹے بچے تھے جن کو محکمہ کے عملہ نے بڑی محنت سے پالا تھا مادہ گینڈا کچھ دنوں سے بیمار تھی اس کے علاج کی بھرپور کوشش کی گئی لیکن وہ صحت یاب نہ ہوسکی اور وہ مر گئی‘ پارک میں گینڈوں کو دیکھنے کے لیے آئے شائقین افسردہ ہو گئے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر