ایک مار خور کا شکار کرنے کیلئے اس شخص نے کتنے کروڑ روپے کا پاکستانی حکومت سے پرمٹ خریدا ؟ جان کر آپ کی آنکھیں کھیلی کی کھلی رہ جائیں گی 

ایک مار خور کا شکار کرنے کیلئے اس شخص نے کتنے کروڑ روپے کا پاکستانی حکومت سے ...
ایک مار خور کا شکار کرنے کیلئے اس شخص نے کتنے کروڑ روپے کا پاکستانی حکومت سے پرمٹ خریدا ؟ جان کر آپ کی آنکھیں کھیلی کی کھلی رہ جائیں گی 

  

چترال(مانیٹرنگ ڈیسک) مارخور پاکستان کا قومی جانور ہے جو معدومی کے خطرے سے دوچار ہے اور اس کے شکار پر پابندی عائد ہے تاہم محکمہ جنگلی حیات ہر سال بولی کے ذریعے مارخور کے شکار کے دو پرمٹ جاری کرتا ہے۔ اس سال ایک امریکی شہری نے بولی کے ذریعے 1کروڑ 30لاکھ روپے میں پرمٹ حاصل کیا اور چترال میں ایک مارخور کا شکار کیا۔محکمہ جنگلی حیات کے مطابق کرسٹوفرنامی اس امریکی شہری نے جس مارخور کا شکار کیا اس کی عمر 10سال تھی اوراس کے سینگوں کی لمبائی 14انچ تھی۔

محکمے کی طرف سے بتایا گیا کہ کرسٹوفر نے پرمٹ کی رقم کے علاوہ 10ہزار روپے شوٹنگ لائسنس کے لیے بھی ڈیپازٹ کروائے۔ پرمٹ سے حاصل ہونے والی رقم کا 80فیصد مقامی لوگوں کی فلاح و بہبود پر خرچ کیا جائے گا۔ دی نیوز کے مطابق محکمہ جنگلی حیات ہر سال مارخور کے شکار کے پرمٹ جاری کرکے 80ہزار ڈالر (تقریباً 1کروڑ 11لاکھ روپے)سے 1لاکھ ڈالر (تقریباً 1کروڑ 39لاکھ روپے) کے درمیان رقم کماتا ہے۔ اس میں سے 80فیصد رقم مقامی آبادی کی تعلیم، صحت اور دیگر ترقیاتی منصوبوں پر خرچ کی جاتی ہے جبکہ باقی 20فیصد قومی خزانے میں جمع کروائی جاتی ہے۔

مزید : قومی