ٹیکس اداروں کی کڑی مانیٹرنگ نا گزیر‘ذوالفقار خان

    ٹیکس اداروں کی کڑی مانیٹرنگ نا گزیر‘ذوالفقار خان

  



لاہور(این این آئی)پا کستان ٹیکس فورم کے چیئرمین ذوالفقار خا ن نے کہا ہے کہ ٹیکس آمدن میں اضافے کیلئے سب سے پہلے چورراستے بند کئے جائیں،ٹیکس دہندگان کی بجائے ٹیکس اکٹھا کرنے والے اداروں کی کڑی مانیٹرنگ نا گزیر ہے، بعض ٹیکس قوانین عوام کے حقوق سلب کرتے ہیں اور جو ٹیکس دیتا ہے وہ ان معاملات سے آگاہ ہے۔ان خیالات کا اظہارا نہوں نے ٹیکس آگاہی کیلئے منعقدہ ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر پیٹرن لا ہو رٹیکس با ر ضیا حیدر رضو ی، جنرل سیکرٹری پاکستان ٹیکس ایڈوائزر ایسو سی ایشن خواجہ ریاض حسین،سابق صدر لاہور ٹیکس بارعائشہ قاضی،علی احسن رانا،مامون نثار،عامر قدیر سمیت دیگر بھی موجود تھے۔

ذوالفقار خان نے کہاکہ ملکی معیشت کا پہلے ہی بیڑ ہ غر ق ہے اور رہی سہی کسر آ ئے روز ٹیکس قوانین اور پا لیسیوں میں تبد یلیوں سے پوری ہو رہی ہے۔دوسرے  ترمیمی آرڈیننس 2019سے ملکی، غیر ملکی سر ما یہ کا روں اور شہریوں کیلئے ایسی شرائط ر کھی گئی ہیں جو کہ نا قا بل قبول ہیں اور یہ بل کی صورت میں پارلیمنٹ سے پاس نہیں ہو سکتا۔انہوں نے کہا کہ حکومت ایسی تر میم کیوں کر تی ہے جس سے عوام کو ریلیف ملنے کی بجائے ان کیلئے مزید مشکلات بڑھتی ہیں۔ دیگر مقررین نے کہاکہ حکومت بیورو کریسی کے نرغے میں آنے کی بجائے عوام کی نبض پر ہاتھ رکھ کر فیصلے کرے،قوانین اور پالیسیوں کا نفاذ کرنے سے پہلے لوگوں کی معاونت کرنے والی ایسوسی ایشنز کے نمائندوں اور اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کی جائے تاکہ ان پالیسیوں کے سو فیصد نتائج حاصل ہو سکیں۔انہوں نے کہا کہ عوام کے حالات ایسے نہیں ہیں کہ ان پر مزید شرا ئط کا بم گر اکر معیشت کے پہیے کو چلایا جا سکتا ہے اس لئے حکومت اپنی پالیسیوں پرنظرثانی کرے۔

مزید : کامرس