نا اہل حکومت نے قرضوں میں 7600ارب کا اضافہ کیا، اسحاق ڈار

 نا اہل حکومت نے قرضوں میں 7600ارب کا اضافہ کیا، اسحاق ڈار

  



 لندن (آئی این  پی) مسلم لیگ (ن) کے رہنماء سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ ہے  پی ٹی آئی کی نا اہل اور نکمی حکومت نے صرف ایک سال کے اندر  ملکی قرضوں میں  7 ہزار 6سو ارب کا اضافہ کیا ہے،پی ٹی آئی نے قرضوں کی واپسی پر جھوٹ بولنے کا ایک عجب تماشا لگا رکھا ہے، مسلم لیگ (ن) کے دور میں   چار سال میں ابھی ایک سال میں مسلم لیگ ن کے چار سال کے قرضوں سے بھی نو سو ارب زیادہ 6 ہزار سات سو ارب کے مقابلے میں ایک سال میں 7 ہزار چھ سو ارب کا اضافہ ہوا ، 71 سال میں پاکستان کے قرضے 24 ہزار 2 سو ارب روپے تھے  جبکہ موجودہ حکومت نے ملکی خزانے پر  71 سال میں لئے گئے قرضوں کا 31 فیصد  قرضے کا اضافہ صرف ایک سال میں کیا، مسلم لیگ (ن) کی حکومت میں ہزاروں ترقیاتی منصوبے  لگے، پی ٹی آئی حکومت نے ملک کو اب تک ماسوائے قرضوں کے کچھ نہیں دیا ۔6 فیصد لوگ مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں غربت کی لکیر سے باہر نکلے۔ ڈیڑھ کروڑ لوگوں کو خط غربت سے نکالا لیکن اس نکمی حکومت نے ملک معیشت کا ستیا ناس کر دیا جی ڈی پی گروتھ 5.8 فیصد سے 3.3 فیصد تک آ چکی ہے جو آئندہ سال 2.7 فیصد رہے گی۔ عمران نیازی حکومت نے پچاس لاکھ لوگوں کو صرف ایک سال کے دوران دوبارہ خط غربت میں دھکیل دیا ہے۔ 15 لاکھ 25 لوگوں کو بے روزگار کر دیا ہے۔ ہمارے دور سے پہلے صوبوں کووفاق کی جانب سے گیارہ سو ارب روپے ملتے تھے ہم نے اس میں اضافہ کرکے اس حجم کو 25 سو ارب روپے کر دیا تھا اسحاق ڈار نے  وڈیو بیان  میں پی ٹی آئی حکومت پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا  کہ موجودہ حکومت نے  ملکی تاریخ کے ریکارڈ قرضے لے کر بھی کوئی ترقیاتی منصوبہ شروع نہیں کیا، مسلم لیگ (ن)  حکومت سے موازنہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے چار سال کے قرضوں سے بھی نو سو ارب زیادہ 6 ہزار سات سو ارب کے مقابلے میں ایک سال میں 7 ہزار چھ سو ارب کا اضافہ ہوا ۔ جب کہ پی ٹی آئی کی حکومت کے ایک سال میں حکومتی قرضوں کے حجم میں 7 ہزار 6سو ارب کا اضافہ ہوا  ۔پی ٹی آئی نے قرضوں کی واپسی پر جھوٹ بولنے کا ایک عجب تماشا لگا رکھا ہے اور یہ کہا جا رہا ہے کہ نئے قرضے پرانے قرضوں کے ادائیگی کے لئے لیے جا رہے ہیں۔کوئی عمران خان نیازی سے پوچھے کہ مسلم لیگ نواز کے  پانچ سال کے یومیہ قرضے میں جو اضافہ تھاوہ پانچ ارب روپے تھا لیکن اب پی ٹی آئی حکومت میں ملک کے اوپر یومیہ قرضے میں ہونے والا اضافہ 20 ارب 80 کروڑ روپے ہے۔  حکومت کے واجب الادا قرضوں میں جو پہلے تیس ہزارارب روپے تھی اب پی ٹی  آئی کی حکومت کے صرف ایک سال میں دس ہزار ارب روپے حکومتی قرضوں میں اضافہ ہوا ہے۔ پی ٹی آئی حکومت صرف ایک سال میں حکومت پر واجب الادا قرضوں کو تیس ہزار ارب روپے سے چالیس ہزار ارب روپے تک لے گئی ہے۔ پبلک ڈیٹ میں 71 سال میں جو کل قرضہ تھا 24 ہزار 2 سو ارب روپے میں 31 فیصد اضافہ پی ٹی آئی حکومت کے صرف ایک سال میں ہوا ہے ۔ ضرب عضب میں  اس وقت مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے کئی سو ارب روپے ریلیز کئے  اور دہشتگردوں کے خلاف ردالفساد لڑی، کراچی کی سیکیورٹی صورتحال کو بہتر کرنے کے لئے اس وقت کی وفاقی حکومت نے اربوں روپے فراہم کیے۔ ن لیگ کے دور حکومت میں ملک میں بجلی کی طلب اور رسد میں فرق کو ختم کرنے کے لئے لوڈ شیڈنگ خاتمے کے لئے 11 ہزار میگا واٹ کے پاور پلانٹ لگائے گئے۔ ایل این جی بیس 36 سو میگا واٹ کے پروجیکٹ بھی مسلم لیگ ن کی حکومت کا کارنامہ ہے۔ ملک سے 18 سے 20 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ مسلم لیگ ن نے کیا۔ گیس کی لوڈ شیڈنگ ختم کی۔ موٹرویز بنائیں۔لاہور سے کراچی موٹروے منصوبہ بنایا ملک میں ہزاروں ترقیاتی منصوبے بنائے۔ جس کے  نتیجے میں ملک کی مجموعی جی ڈی پی پیداوار 22 ہزار ارب روپے سے 34 ہزار ارب روپے ہو گئی لاکھوں افراد کو روزگار فراہم کیا۔

 اسحاق ڈار 

مزید : صفحہ آخر


loading...