بارش‘ سرد ہوائیں‘ شہری گھروں میں قید‘ گیس غائب‘ ہوٹل مالکان کی لوٹ مار

بارش‘ سرد ہوائیں‘ شہری گھروں میں قید‘ گیس غائب‘ ہوٹل مالکان کی لوٹ مار

  



ملتان‘ شجاع آباد‘ کوٹ ادو‘ رحیم یار خان (سپیشل رپورٹر‘ تحصیل رپورٹر‘ بیورو رپورٹ‘ نمائندہ پاکستان) بادلوں کے ساتھ ہلکی بارش اور یخ بستہ سردہوائیں ملتان سمیت مضافاتی علاقوں میں سردی کی شدت میں اضافہ ہوگیا۔سردی کے باعث شہری ٹھٹھر کررہ گئے معمولات زندگی متاثر ہونے لگے۔اس ضمن میں ملتان سمیت مضافاتی علاقوں میں گزشتہ روز بادلوں کے ساتھ ساتھ ہلکی بارش اور یخ بستہ ہواؤں کا سلسلہ جاری رہا جس کے باعث سردی کی شدت میں اضافہ ہوگیا ہے۔یخ بستہ ہواؤں نے شہریوں کو ٹھٹھرا (بقیہ نمبر35صفحہ12پر)

کررکھ دیاہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق ملتان سمیت جنوبی پنجاب کے بیشتر علاقوں میں آج بھی بادل چھائے رہنے اور گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکا ن ہے۔ گیس کی غیر اعلاینہ لوڈشیڈنگ کاسلسلہ جاری ہے جس پر شہریوں نے شدید احتجاج کرتے ہوئے کہاکہ گیس نہ ہونے کی وجہ سے ہم غیر معیاری مہنگے بازاری کھانے خریدنے پر مجبور ہیں ہماری اعلیٰ احکام سے اپیل ہے کہ فوری طورپر گیس کی غیر اعلاینہ لوڈشیڈنگ ختم کی جائے۔ شہر اور گردونواح میں یخ بستہ ہوائیں چلنے کے بعد سردی کی شد ت میں اضافہ ہوگیاہے، شدید سردی کے باعث بازار کی رونقیں ماند پڑ گئی ہیں اور لنڈا بازار کی رونقیں بحال ہوگئی ہیں، شدید سردی کے باعث لوگ اپنے گھروں تک محدود ہوکر رہ گئے ہیں اور سردی سے بچنے کے لیے لوگوں کی بڑی تعداد نے لنڈا بازار کا رخ کرلیاہے اور گرم کپڑے،واسکٹ،جیکٹس اور دیگر گرم ملبوسات کی خریداری میں تیزی آگئی ہے، سردی کے باعث بازار میں لوگوں کی رش نہ ہونے کے برابر جبکہتاجرطبقہ سردی سے بچنے کے لئے آگ جلا کر آگ تاپتے رہے،دوسری جانب کوٹ ادو شہر کے بعض علاقوں میں گیس پریشر میں کمی کے باعث لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ شہراور گردونواح میں دن بھر بادلوں نے ڈیرے ڈالے رکھے بادلوں کے باعث سردی کی شدت میں اضافہ ہوگیا جبکہ شام کے وقت ہلکی پھلکی بوندا باندی ہوئی سردی میں اضافہ کے باعث لکڑی اور کوئلہ کے کاروبار کرنے والوں کی موجیں لگی رہیں،دوکانداروں نے من مرضی کے ریٹس پر لکڑی اور کوئلہ فروخت کیا جس کے باعث عام شہری خاصے پریشان دکھائی دئیے۔۔ سوئی گیس کی بندش کے باعث ہوٹلوں کے وارے نیارے ہوگئے‘ شہری لمبی قطاروں میں ناشتے اورکھانے مہنگے داموں خریدنے لگے‘ سوئی گیس حکام نے شہریوں کی فون کال اٹنڈکرنابندکردیا۔تفصیل کے مطابق موسم گرمامیں بجلی اورسرمامیں سوئی گیس کی لوڈشیڈنگ نے روزمرہ کی زندگی اجیرن بناکررکھ دی ہے‘ بیس گھنٹوں سے سوئی گیس کی جاری بندش نے شہریوں کوشدیدپریشانی میں مبتلاکررکھاہے‘ چھٹی کے روزگیس کی بندش کے باعث شہری ہوٹلوں اوردکانوں کے باہرلمبی قطاریں بناکرصبح کے ناشتے اوردوپہروشام کے کھانے مہنگے داموں خریدتے رہے‘ گیس کی بندش کافائدہ اٹھاکرہوٹل مالکان ودکانداروں نے بھی لوٹ سیل میلے لگادئیے اورشہریوں کوانتظامیہ لٹتی دیکھتی رہی جوعوام دوست اقدامات کے نعرے لگانے والی حکومت اوراس کے اداروں کی خاموشی پرسوالیہ نشان ہے۔سردی کی شدت میں اضافہ کے ساتھ ہی گیس کے کم پریشر نے شہریوں کو ایک بار پھر پریشان کر رکھاہے۔شہر کے متعدد علاقوں میں گیس کے کم پریشر کی وجہ سے شہریوں کا کھانا بنانے میں شدید مشکلات کا سامنا ہے۔صبح 6 سے 10 بجے تک گیس کا پریشر کم ہو تا ہے اسی طرح شام کو بھی گیس کا پریشر کم ہو جا تا ہے جبکہ بعض علاقوں میں گیس بالکل بھی نہیں آ رہی۔شہریوں کا کہنا تھا کہ جب بھی کھانا بنانے کا وقت ہو تا ہے گیس کا پریشر کم ہو جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہیں تسلی دی گئی تھی کہ ایل این جی آنے کے بعد گیس کا پریشر ٹھیک ہو جائے گا لیکن گیس کے کم پریشر پر قابو نہیں پایا جاسکا۔ اگر گیس پریشر ٹھیک نہ ہوا تو وہ سو ئی گیس آفس کے باہر دھر نا دینے پر مجبور ہو جائیں گے۔دوسری طرف محکمہ سوئی گیس حکام کا کہنا ہے کہ طلب زیادہ ہونے کی وجہ سے وقتی طور پر یشر کم ہو تا ہے، جس علاقہ میں پریشر کم ہو تا ہے وہاں سوئی گیس کی ٹیم جاکر گیس کے کم پریشر کو ٹھیک کرتی ہے۔

گیس غائب

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...