ایم ڈی اے، نئی لیڈر شپ لانے کیلئے 15جنوری کو ریفرنڈم، انصا ف یونین واحد آپشن، راشد انصاری رافیع شوذب

ایم ڈی اے، نئی لیڈر شپ لانے کیلئے 15جنوری کو ریفرنڈم، انصا ف یونین واحد آپشن، ...

  



ملتان (سپیشل رپورٹر) نئی لیڈر شپ، نئے چہرے، سیاسی انقلاب اورتعلیم یافتہ اور ینگ بلڈ لوگوں کا ٹرینڈ صرف ملکی سیاست ہی نہیں بلکہ ملک کے مختلف اداروں میں بھی چل پڑا ہے جو کہ باشعور عوام کی پہچان اور روشن پاکستان کی نوید ہے۔ان خیالات کا اظہار ایم ڈی اے ریفرنڈم 2020-22ء میں حصہ لینے والے انصاف سٹاف یونین کے امیداواروں نے پاکستان فورم میں اظہار خیال کرتے ہوئے کیا۔فورم سے اظہار خیال کرتے ہوئے صدارت کے(بقیہ نمبر27صفحہ12پر)

 امیداوار راشد انصاری نے کہا کہ وہ گزشتہ دس سال سے ملتان ڈویلیپمنٹ اتھارٹی (ایم ڈی اے) میں انفارمیشن ٹیکنالوجی ڈیپارٹمنٹ کے ہیڈ کے طور پر خدمات انجام دے رہے ہیں انھوں نے کہا کہ ریفرنڈم میں حصہ لینے کا مقصد ایم ڈی اے میں نئی لیڈر شپ، نئے چہرے، سیاسی انقلاب،تعلیم یافتہ اور ینگ بلڈ لوگوں کو آگے لانا ہے تاکہ ملازمین کی فلاح وبہبود کے ساتھ ساتھ ادارہ کی نیک نامی میں بھی اضافہ کیا جاسکے،انھوں نے کہا کہ ایم ڈی اے ملامین الیکشن میں اپنے مسائل کے بہتر حل اور آواز کو بااختیار لوگوں تک پہنچانے کیلئے ہمارا ساتھ دیں اور ثابت کریں کہ ایم ڈی اے ایک ذمہ دار، سلجھا ہوا اور تعلیم دوست ادارہ ہے۔فورم سے اظہار خیا ل کرتے ہوئے امیدوار برائے سیکرٹری جنرل سید رافیع شوذب کاظمی نے کہاکہ ہمارا منشور ہے کہ ریفریڈم میں کامیابی کے بعد ادارہ کے تمام ملازمین کے حقوق کا تحفظ کیاجائے گا اور ہماری یونین کی جانب سے جاری کردہ 25نکاتی منشور پر جس میں ملازمین کی اپ گریڈیشن،تعلیمی قابلیت الاؤنس،ہیلتھ کارڈ اجراء،بچوں کی ملازمت،نئی پوسٹو ں کے اجراء سمیت دیگر اہم امور پر عملدرآمد کرایا جائے گا۔فورم سے اظہار خیال کرتے ہوئے انصاف سٹاف یونین کے سرپرست اعلی شیخ کامران احسان،رخسار قریشی،ملک عباس عاربی،فہیم احمد ودیگر نے کہا کہ ایم ڈی اے میں نئی لیڈر شب لانے کیلئے ریفرنڈم میں حصہ لے رہے ہیں تاکہ ملازمین کو یونین کی سیاست پرقابض عناصر سے چھٹکارا دلایا جاسکے انھو ں نے ایم ڈی اے ملازمین سے اپیل کی کہ وہ ان کا ساتھ دیں تاکہ ملازمین کو ان کے حقوق،عزت نفس اور مراعات کی فراہمی کو یقنی بنایا جاسکے۔انھوں نے کہا کہ ملازمین 15جنوری کو ہونے والے ریفرنڈم میں نئی قیاد ت کا ساتھ دیں تاکہ پڑھے لکھی قیادت کے ساتھ ادارہ کی نیک نامی میں اضافہ کیا جاسکے۔

راشد لغاری 

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...