اضاخیل ڈرائی پورٹ تجارت اور ترقی کا نیا سنگ میل ثابت ہوگا: میاں خلیق الرحمان 

اضاخیل ڈرائی پورٹ تجارت اور ترقی کا نیا سنگ میل ثابت ہوگا: میاں خلیق الرحمان 

  



پشاور (سٹاف رپورٹر)مشیر وزیر اعلیٰ برائے محکمہ اعلیٰ تعلیم میاں خلیق الرحمن نے کہا ہے کہ اضاخیل ڈرائی پورٹ نوشہرہ میں تجارت اور ترقی کا نیاسنگ میل ثابت ہوگا۔ ائیر یو نی ورسٹی اور ٹیکنیکل یونی ورسٹی کے قیام سے نوشہرہ میں ٹیکنیکل اور اعلیٰ تعلیم کے نئے دروازے کھلیں گے۔ وزیر اعظم عمران خان کے وژن کے مطابق صوبے کے تمام محکموں میں ڈیجیٹلائزیشن سے اداروں میں اصلاحاتی عمل مزید تیز ہو جائیگا۔ نوشہرہ سمیت تمام صوبوں کے کالجز میں سٹاف کی کمی کو پورا کرنے کے لئے ترجیحی بنیادوں پر کام کا آغاز ہوگا۔ سرکاری کالجز میں بی ایس چار سالہ ڈگری پروگرام کے لئے کالجز میں تمام تعلیمی سہولیات مہیا کرنے کے لئے ایمرجنسی بنیادوں پر کام کا آغاز ہوگا۔ نئے تعلیمی سال سے نئے کالجز کام شروع کردیں گے۔ خواتین کے لئے اعلیٰ تعلیمی اداروں میں اضافہ ترجیحات میں شامل ہیں۔ ہر ضلع میں ایک خواتین یونی ورسٹی کا قیام بھی ترجیحات میں شامل ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے نوشہرہ کے مختلف مقامات پبی، جلوزئی، ڈاک اسماعیل خیل،تارو جبہ میں مختلف وفود سے ملاقات کے دوران کیا۔ مشیر اعلیٰ تعلیم میاں خلیق الرحمن  نے کہا کہ نوشہرہ میں اضاخیل ڈرائی پورٹ کا قیام ایک بہت بڑی کامیابی ہے۔ اس ڈرائی پورٹ کے قیام سے جہاں ایک طرف علاقے میں ترقی کا نیا دور شروع ہوگا وہاں پر روزگار کے مواقع بھی پیدا ہوں گے۔تجارت اور معیشت کو استحکام ملے گا۔ انہوں نے کہا کہ نوشہرہ صوبے کا گیٹ وے ہیں اس وجہ سے نوشہرہ صوبہ بھر میں اہمیت کا حامل ضلع تصور کیا جاتا ہے۔ رشکئی اکنامک زون سمیت نوشہرہ میں کئی میگا ترقیاتی منصوبے جاری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سابق دور میں ضلع نوشہرہ میں سابق وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کی کوششوں سے نوشہرہ میں ٹیکنیکل یونی ورسٹی کا قیام عمل میں آچکا ہے وہاں پر کلاسز بھی شروع ہیں۔ اور ائیر یونی ورسٹی کا منصوبہ بھی نوشہرہ میں شیڈول کیا گیا ہے مگر ائیر یونی ورسٹی کے لئے زمین کے حصول میں چند رکاوٹیں درپیش ہیں وزیر دفاع پرویز خٹک نے وزیر اعظم عمران خان کو اس سلسلے میں فنڈز اور زمین کے حصول کے حوالے سے مطالبہ پیش کردیا ہے  جس پر ہمیں قوی امید ہے کہ ائیر یونی ورسٹی بھی جلد نوشہرہ میں قائم کردی جائیگی۔ انہوں نے کہا کہ خواتین کے لئے اعلیٰ تعلیم کے مذید مواقع پیدا کرنے کے لئے محکمے کو ہدایات جاری کردی گئی ہیں۔ ہر ضلع میں ایک خواتین یونی ورسٹی کا قیام ترجیحات میں شامل ہیں۔ کئی اضلاع میں  جیسے صوابی، مردان اور پشاور میں پہلے سے خواتین یونی ورسٹیاں کام کر رہی ہے۔ جس میں خواتین کو ایک الگ پلیٹ فارم  مہیا ہوگا۔ جہاں وہ بغیر کسی ہچکچاہٹ سے اعلیٰ تعلیم معاشرے اور پختون اقدار کے اندر رہتے ہوئے حاصل کریگی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...