یو سی کوٹھیالہ کو تحصیل ایبٹ آبادکیساتھ ہی برقرار رکھا جائے‘ عمائدین

  یو سی کوٹھیالہ کو تحصیل ایبٹ آبادکیساتھ ہی برقرار رکھا جائے‘ عمائدین

  



ایبٹ آباد(ڈسٹرکٹ رپورٹر)یونین کونسل کوٹھیالہ کو تحصیل لوئر تناول میں شامل کرنے پر یونین کونسل کوٹھیالہ کی عمائدین کی مشاورتی بیٹھک یونین کونسل کوٹھیالہ کو تحصیل ایبٹ کے ساتھ ہی برقرار رکھا جائے عدالتی چارہ جوئی کرنے کا فیصلہ اہلیان کوٹھیالہ کل بروز پیر ڈی سی آفس ایبٹ آباد کے باہر میڈیا کے سامنے پر امن احتجاج بھی ریکارڈ کروائیں گے انتظامی یونٹ عوام کی سہولت کے لیئے بنا? جاتے ہیں نہ کہ عوام کی مشکلات میں اضافے کے لیئے کسی کو بھی کوٹھیالہ کی عوام کے جائز حقوق کو غضب کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی اہلیان کوٹھیالہ کو تحصیل لوئر تناول کے قیام پر کوئی اعتراض نہیں ہے تاہم کوٹھیالہ کی عوام کو ان کی مرضی کے مطابق تحصیل ایبٹ آباد کے ساتھ ہی برقرار رکھا جائے ہیڈ کواٹر کے قیام کے لیئے کوٹھیالہ کی عوام کو اعتماد میں نہیں لیا گیاتفصیلات کے مطابق یونین کونسل کوٹھیالہ کے عمائدین کا مشاورتی اجلاس زیر صدارت سابق چیئرمین ماسٹر محمد سلیمان وی سی 1 کوٹھیالہ اورنظر محمد سابق نائب ناظم وسی 2 کوٹھیالہ یونین کونسل آفس کوٹھیالہ میں منعقد ہوا جس میں اہلیان یونین کونسل کوٹھیالہ کی عوام نے کثیر تعداد میں شرکت کی اجلاس میں تحصیل لوئر تناول کے ہیڈ کواٹر کے قیام کے حوالے سے مشاورت کی گئی عمائدین نے اجلاس سے اظہار خیال کیا اور مختلف پہلوؤں پر غور کیااجلاس کے اختتام پر طے پایا کہ کل بروز پیر ڈی سی آفس کے باہرمیڈیا کے سامنے پر امن احتجاج ریکارڈ کروایا جائے گا مقررین کا کہنا تھا کوٹھیالہ کی عوام کو تحصیل لوئر تناول کے قیام پر کوئی اعتراض نہیں ہے تاہم تحصیل لوئر تناول کے سینٹر مقام کے حوالے سے یونین کونسل کوٹھیالہ کی عوام کو اعتماد میں نہیں لیا گیاجوکہ عوامی حقوق سلب کرنے کے مترادف ہے ہونا تو یہ چاہیئے تھاکہ کہ تحصیل لوئر تناول کے قیام کے وقت ساری یونین کونسل کے عوام کی رائے کو شامل کیا جاتا جس کا آسان طریقہ وہاں کی مقامی لوکل قیادت جو کہ چیئرمین نائب چیئرمین اور کونسلرز پر مشتمل ہوتی ہے یہ وہ منتخب نمائندے ہوتے ہیں جوہر وقت عوام کے بیچ میں موجود رہتے ہیں کوٹھیالہ کی عوام کی مرضی ان لوگوں سے پوچھی گئی جن کو اپنی مرضی پر بھی اختیار نہیں ہوتا ہیڈ کواٹر کے لیئے ایسے مقام کا تعین کیا جانا چاہیئے جس پرکوٹھیالہ کی عوام کو بھی اعتراض نہ ہوتااب بھی وقت ہے حکومت خیبر پختونخواہ ایسا فیصلہ کرے جو عوامی مفاد میں ہو تاکہ انتشار سے بچا جاسکے کوٹھیالہ کی عوام امن پسند ہے تاہم اگر کوٹھیالہ کی عوام کے حقوق پر شب خون مارنے کی کوشش کی گئی تو عوامی طاقت سے بھرپور مزاحمت کی جائے گی یونین کونسل کوٹھیالہ کے حقوق کی جنگ ہر فورم پر لڑیں گے ہم نے ضلعی حکومت اور صوبائی حکومت کو اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرنے لیئے کئی درخواستیں بھی کی ہیں لیکن ہماری آواز پر حکومت کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی اب کوٹھیالہ کی عوام نے عدالت کا دروازہ کھٹکانے کا حتمی فیصلہ کر لیا ہیجوکہ ہمارا آئینی اور قانونی حق ہم کسی صورت اپنے حقوق کی جنگ سے پیچھے نہیں ہٹیں گے

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...