آزادی صحافت پر قدغن و پابندیاں موجودہ حکومت کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے

  آزادی صحافت پر قدغن و پابندیاں موجودہ حکومت کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے

  



حویلیاں (اختر زمان سے) آزادی صحافت پر قدغن و پابندیاں موجودہ حکومت کی نااہلی کا منہ بولتا ہیں پاکستان مسلم لیگ (ن) نام کے بجائے کام کی سیاست پر یقین رکھتی ہے موجودہ حکومت کی ناقص پالیسیوں کا نتیجہ اگلے 2سالوں میں عوام کے سامنے آجائے گا ملکی معیشت کی تباہی کی زمہ دار موجودہ حکومت کی نااہل ٹیم ہے ان خیالات کا اظہار پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صوبائی جنرل سکیرٹری کے پی کے سابق ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی اور ایم این اے حلقہ N A.15مرتضی جاوید عباسی پریس کلب حویلیاں یونین آف جرنلسٹس حویلیاں کی نو منتخب کابینہ کو مبارکباد پیش کرنے انکے ہمرا ہ صدر تحصیل حویلیاں احمد نواز خان رہنما مسلم لیگ ن محمد نبیل عباسی جنرل سکیرٹری حویلیاں سٹی غلام مصطفی شیخ نصیر احمد عباسی حاجی اخلاق احمد اعوان شکیل احمد تنولی ممبر کنونمنٹ بورڈ رحمت تنولی میر احمد خان فاروق خان حاجی سخی سلطان حافظ غلام سرور حاجی اسحاق عباسی راشد خان خالد تنولی ناصر سواتی سردار ارشد رحمان جمیل عباسی خواجہ عبدالباسط ابرار خان اختر نواز خان عباس علی یاسر تنولی اسد تنولی اور محمد علی عباسی شامل تھے اس موقع پر انہوں نے کہا کہ صحافت ریاست کا اہم ستون ہے مسائل کی نشاندہی اور حکام بالا تک پنچانا آپ کی ذمہ داری ہے آپ لوگ قلم کے ذریعے جہاد کر رہے ہیں امید کرتا ہوں کہ آپ اپنی ذمہ داریاں احسن طریقے سے سر انجام دیں گے تمام سیاسی جماعتوں کو کوریج دینا آپ کی ذمہ داری ہے لیکن حقائق کو مد نظر رکھتے ہوئے انہیں بیان کرنا اور عوام کے سامنے پیش کرنا ہی صحافی کی اولین ذمہ داری ہو تی ہے موجودہ حکومت نے میڈیا انڈسٹری کو تباہی کے دھانے پر پہنچا دیا ہے یہ وہی میڈیا ہے جس نے تحریک انصاف کا ہر طرح سے ساتھ دیا اور پاکستان تحریک انصاف میڈیا کو انتقام کا نشانہ بنا رہی ہے میں امید کر تا ہوں آپ گھبرائیں گے نہیں اسی طرح ثابت قدم رہیں گے اور اپنی پر و فشینل ذمہ داریاں اسی طرح نبھاتے رہیں گے غیر جانبدارانہ صحافت ایک صحافی کے لیے اعزاز ہوتی ہے عوام کو موجودہ حالات اور حکومت کی کارکردگی کو عوام کے سامنے لانا آپ کی اولین ذمہ داری ہے انھوں نے ملکی حالات پر بات کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو اقتصادی معاشی اور دفاعی اعتبار سے اس وقت سب سے آگے ہونا چاہیے تھا لیکن بد قسمتی سے اس حکومت کو پاکستانی عوام پر مسلط کر دیا گیا جو کہ ہماری بد قسمتی ہے اگر میاں نواز شریف کو رہنے دیا جاتا تو ملک ترقی کر رہا ہوتا ورلڈ بینک کی رپورٹ کے مطابق اس وقت جی ڈی پی کی شرح 2.4ہے جبکہ ہمارے دور میں 5فیصد پر تھی حالانکہ ہمارے دور میں دھرنے تھے ملک میں توانائی کا بحران تھا امن و امان کی صورتحال انتہائی ابتر تھی ملک دہشت گردی کی لپیٹ میں تھا لیکن اسکے باوجود ملک میں خوشحالی تھی ملک تیزی سے ترقی کر رہا تھا مسلم لیگ (ن) کے دور میں حکومت نے معاشی اقتصادی اور دفاعی ترقی تیزی سے جاری تھی انفراسٹرکچر میں ہمارے دور میں بہتری آئی اگر مسلم لیگ کے دور کو موجودہ دور سے موازنہ کیا جائے تو ہمارا دور حکومت مثالی تھا اور پھر اس نااہل اور دھاندلی کی پیداوار حکومت کو پاکستانیوں پر مسلط کر دیا گیا جن لوگوں نے اسے مسلط کیا وہ بھی آج پریشان ہیں ہر پاکستانی غربت مہنگائی کی وجہ سے پریشان ہیں اور اس مصیبت سے چھٹکارہ چاہتا ہے مرتضی جاوید عباسی نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ اگلے ڈیڑھ سال میں کوئی تبدیلی نہیں دیکھ رہا یہ بات پوری زمہ داری کیساتھ کہہ رہا ہوں ورلڈ بینک کی رپورٹ کے مطابق 10لاکھ لوگ بیروزگار ہوئے جبکہ پاکستان چیمبر آف کامرس کی رپورٹ کے مطابق 26لاکھ بیروزگار ہوئے یہ نااہلوں کا وہ ٹولہ ہے جس نے 50لاکھ گھر اور ایک کروڑ نوکریاں دینے کا وعدہ کیا تھا یہ تو آ کے لوگوں کو بیروزگار کر رہے ہیں حکو مت کے پاس انتقامی سیاست کے سوا کوئی پالیسی نہیں جس دور حکومت میں منتخب نمائندے کو بات کرنے کا حق نہیں وہ پاکستان کی تقدیر کیسے بدلے گا مسلم لیگ (ن) تختیوں کی سیاست پر یقین نہیں رکھتی شیر کا کام شکار کر کے کھانا ہے کسی کا شکار شدہ کھانا شیر نہیں کھاتا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر