میٹرو میں صرف انڈرویئر پہن کر سوار ہونے کا دن، لوگ کپڑے گھروں پر ہی چھوڑ آئے

میٹرو میں صرف انڈرویئر پہن کر سوار ہونے کا دن، لوگ کپڑے گھروں پر ہی چھوڑ آئے
میٹرو میں صرف انڈرویئر پہن کر سوار ہونے کا دن، لوگ کپڑے گھروں پر ہی چھوڑ آئے

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) لندن میں گزشتہ روز میٹرو میں صرف انڈرویئر پہن کر سوار ہونے کا عجیب و غریب دن منایا گیا۔ میل آن لائن کے مطابق یہ دن ہر سال منایا جاتا ہے اور ہزاروں مردوخواتین اپنے ٹراﺅزر اتار کر صرف انڈرویئرز کے ساتھ آتے ٹرین میں سفر کرتے اور کچھ ہلاگلا کرتے ہیں۔ اس دن کا آغاز 2002ءمیں نیویارک سے ہوا تھا جب کچھ منچلوں نے ایک ’پرینک‘ کیا تھا اور انڈرویئر پہن کر میٹرو میں سوار ہو گئے تھے۔

ان کی یہ حرکت اس قدر مقبول ہوئی کہ اب دنیا کے مختلف ممالک کے 60سے زائد شہروں میں ہر سال ایک تہوار کی صورت منائی جاتی ہے۔ ان شہروں میں نیویارک، لندن، برلن، ماسکو اور دیگر شامل ہیں۔یہ دن منانے کا ایک مقصد یہ بھی ہے کہ لوگ جنوری کی سردی کی وجہ سے عجیب سرد مہری کے روئیے اور ڈپریشن کا شکار ہوتے ہیں چنانچہ اس روز ہلا گلا کرکے وہ اس ڈپریشن سے چھٹکارا پاتے ہیں۔یہ لوگ مختلف ٹرین سٹیشنز پر جمع ہوتے، مل کر رقص کرتے اور دیگر تفریح طبع کی سرگرمیاں کرتے ہیں۔ اس تہوار پر لوگوں کو مکمل برہنہ ہونے کی اجازت نہیں ہوتی۔ انہیں اوپر شرٹس اور جیکٹس وغیرہ پہننی ہوتی ہیں۔ بس نیچے پینٹ اور ٹراﺅزر وغیرہ اتارنے کی اجازت ہوتی ہے۔

مزید : برطانیہ


loading...