مانسہر ہ میں بچے سے زیادتی کرنے والے کی حمایت پر مفتی کفایت اللہ کے خلاف ایکشن، پارٹی نے معطل کردیا

مانسہر ہ میں بچے سے زیادتی کرنے والے کی حمایت پر مفتی کفایت اللہ کے خلاف ...
مانسہر ہ میں بچے سے زیادتی کرنے والے کی حمایت پر مفتی کفایت اللہ کے خلاف ایکشن، پارٹی نے معطل کردیا

  



مانسہرہ (ڈیلی پاکستان آن لائن) خیبر پختونخوا کے ضلع مانسہرہ میں ایک بچے کے ساتھ مدرسے کے استاد کی جنسی زیادتی کے معاملے پر غیر ذمہ دارانہ بیانات مفتی کفایت اللہ کے گلے پڑ گئے، جمعیت علماءاسلام کی صوبائی مجلس عاملہ نے انہیں معطل کردیا۔

آئی بی سی اردو کے مطابق خیبر پختونخوا کی صوبائی مجلس عاملہ کے اجلاس میں جے یو آئی ف ضلع مانسہرہ کے امیر مفتی کفایت اللہ کو معطل کرکے ان کے خلاف تحقیقات کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ مجلس عاملہ نے مولانا عطاءالحق درویش کی سربراہی میں مفتی فضل غفور اور محمد آصف اقبال پر مشتمل تحقیقاتی کمیٹی قائم کردی ہے۔ یہ کمیٹی مفتی کفایت اللہ کے خلاف تحقیقات کرے گی اور جب تک کمیٹی کا کام مکمل نہیں ہوگا تب تک ضلع مانسہرہ کے امیر معطل رہیں گے۔

جے یو آئی ف خیبر پختونخوا کی صوبائی مجلس عاملہ کے اجلاس میں سانحہ مانسہرہ کے واقعے سے لا تعلقی کا اظہار کرتے ہوئے اس پر مفتی کفایت اللہ کے بیانات کو ان کی ذاتی سوچ قرار دیا گیا۔ مجلس عاملہ نے مطالبہ کیا ہے کہ 10 سالہ بچے کے ساتھ زیادتی کرنے والے استاد ملزم شمس الدین کے خلاف اعلیٰ سطح کی تحقیقات کرکے انہیں قرار واقعی سزا دی جائے۔

مفتی کفایت اللہ کا کہنا ہے کہ انہیں اپنی معطلی کے حکم کا علم جے یو آئی کے فیس بک پیج سے ہوا ہے۔ مفتی کفایت اللہ کے اپنے فیس بک پیج پر کارکنوں سے شام 7 بجے #WeStandWithMuftiKifayat کا ٹرینڈ شروع کرنے کی اپیل کی گئی ہے۔

مزید : Breaking News /علاقائی /خیبرپختون خواہ /مانسہرہ


loading...