ٹریفک پولیس کی ون ویلنگ کرنے پر 42  افراد کے خلاف کارروائی 

 ٹریفک پولیس کی ون ویلنگ کرنے پر 42  افراد کے خلاف کارروائی 

  

 پشاور(کرائمز رپورٹر)سٹی ٹریفک پولیس پشاور نے نادرن بائی پاس پر ون ویلنگ کرنیوالوں کیخلاف کریک ڈاؤن کرتے ہوئے 42 نوجوانوں کیخلاف کارروائی کی گئی ہے۔تفصیلات کے مطابق سی سی پی او پشاور عباس احسن کی ہدایت پر سٹی ٹریفک پولیس نے نادرن بائی پاس پر ون ویلنگ کرنیوالوں کیخلاف کریک ڈاؤن کیا جس میں 42 نوجوانوں کو ون ویلنگ کرنے پر حراست میں لے کر موٹر سائیکلوں کو 523/550 میں ضبط کر کے ٹرمینل میں بند کردیا جبکہ سٹی ٹریفک پولیس کی جانب سے ان کے والدین سے تحریری طور پر ضمانت لی گئی۔ اسی طرح سٹی ٹریفک پولیس پشاور کی جانب سے گزشتہ ماہ ہیلمٹ کے بغیر ڈرائیونگ کرنے پر 61558 اور بغیر رجسٹریشن کے موٹر سائیکلیں چلانے پر 500, بغیر لائسنس کے ڈرائیونگ کرنے پر 1274 اور کم عمری میں ڈرائیونگ کرنے پر 600 افراد کے خلاف قانونی کارروائی کی گئی ہے واضح رہے کہ سٹی ٹریفک پولیس پشاور کی جانب سے جاری مہمات کے باعث اب شہریوں نے ہیلمٹ کا استعمال شروع کردیا ہے جس کی ریشو 85 فیصد ہے کیونکہ سٹی ٹریفک پولیس پشاور کی جانب سے بار بار خلاف ورزی کرنیوالوں کے لائسنس کو منسوخ کیا جا تا ہے۔ چیف ٹریفک آفیسر عباس مجید خان مروت نے ون ویلنگ کرنیوالوں کیخلاف کارروائیاں جاری رکھنے کی ہدایت کی اور کہا کہ ون ویلنگ کرنا اپنی زندگی سے کھیلنے کے مترادف ہے کیونکہ اس خطرناک کھیل سے کئی قیمتی جانیں ضائع ہو چکی ہیں اور لوگوں کے خوشیوں بھرے گھر ماتم میں تبدیل ہو گئے ہیں انہوں نے  کہا کہ ون ویلنگ کرنیوالوں کے ساتھ کسی قسم کی نرمی نہیں برتی جائیگی اور ان کے خلاف سخت سے سخت کارروائی عمل میں لائی جائیگی۔انہوں نے کہا کہ سٹی ٹریفک پولیس پشاور ٹریفک قوانین پر عملدرآمد یقینی بنانے کے لئے تمام دستیاب وسائل بروئے کار لا رہی ہے اور اس سلسلے میں کسی کے ساتھ نرمی نہیں برتی جائیگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ شہر بھر میں ٹریفک قوانین سے متعلق مہمات اور اس پر عملدرآمد کو یقینی بنانے کا مقصد شہر میں ٹریفک کا نظام بہتر بنانا اور شہریوں کی زندگیوں کو محفوظ بنانا ہے اس سلسلے میں کسی قسم کی غفلت برداشت نہیں کی جائیگی جبکہ مرتکب افراد کے خلاف قانون کے مطابق سخت کارروائی عمل میں لائی جائیگی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -