2020ء: 35 لاکھ سے زائد پاکستانی بے روز گار‘ مہنگائی ڈبل 

2020ء: 35 لاکھ سے زائد پاکستانی بے روز گار‘ مہنگائی ڈبل 

  

بہاولپور(بیورو رپورٹ‘ ڈسٹرکٹ رپورٹر) نائب امیر جماعت اسلامی جنوبی پنجاب سید ذیشان اختر نے کہا ہے کہ نے کہا ہے کہ سال 2020ء پاکستان کے عوام کے لئے(بقیہ نمبر37صفحہ10پر)

 بہت بھاری ثابت ہوا۔ ملک کی باگ دوڑ مافیاز کے ہاتھ میں رہی جنہوں نے چینی، آٹا، پیڑول غائب کرکے اربوں کما ئے اور ملک کو لوٹا۔35لاکھ سے زائد افراد بے روزگار ہوئے پی ٹی آئی اور پی ڈی ایم میں کوئی فرق نہیں دونوں امریکی غلامی پر راضی ہیں۔ قوم نے تینوں بڑی جماعتوں کے ادوار دیکھ لیے۔یہ پارٹیاں جاگیرداروں اور سرمایہ داروں کے کلبز ہیں۔ جماعت اسلامی عوام کی حقیقی ترجمان اور ملک کو قرآن وسنت کا نظام دینا چاہتی ہے۔۔ ان خیالات کااظہارانہوں نے مرکزی چیئر مین جے آئی کسان جام حضور بخش لاڑ،نصراللہ ناصر،خالد بن جلیل کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔سید ذیشان اخترنے کہا کہ عمران خان کی حکومت میں صرف چینی،آٹا، پیڑول اور ڈرگ ما فیاز نے تر قی کی جب کہ غریب آدمی مہنگائی کی چکی میں پس رہاہے۔تعلیمی بجٹ میں کٹوتی کی گئی۔ ورلڈ بینک اور آئی ایم ایف کی غلامی جاری رہی۔ اس وقت بھی آئی ایم ایف کے لوگ اسلام آباد میں بیٹھے ہیں اور بجلی اور گیس کی قیمتوں میں اضافہ کے لیے حکومت پر دباؤ ڈال رہے ہیں۔ وہ یہی چاہتے ہیں کہ حکومت عوام کی گردنوں کو مروڑے رکھے اور ظلم کا نظام جاری رہے ایسی صورتحال میں جماعت اسلامی نے میدان میں نکلنے کا فیصلہ کیا اس سلسلے میں 26 فروری کو بہاول پور میں ایک جلسہ عام سے سینیٹر سراج الحق بہاول پور کی عوام سے خطاب کرینگے۔ انہوں نے کہا کہ ادارہ شماریات کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق دسمبر 2020 ء کے دوران ملک میں افراط زر کی شرح 8 فیصد ہے جبکہ سالانہ بنیادوں پر اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں 16.3 فیصد اضافہ ہوا ہے ہوٹلوں اور ریسٹورنٹمیں کھانوں کی قیمت میں 9.9 فیصد لباس میں 9.5 فیصد اور صحت میں 8.1 فیصد اضافہ ہوا ہے مجموعی طور جولائی سے دسمبر 202-0 کے دوران افراط زر کی اوسط شرح 8.63 فیصد رہی۔اسی طرح وفاقی وزارت اقتصادی امور کے اعداد و شمار کے مطابق رواں مالی سال 2020.21 کے پہلے پانچ ماہ میں پاکستان کے غیر،لکی قرضے میں 4.50 ارب ڈالر کااضافہ ہوا ہے موجودہ حکومت نے نومبر 2020 ء کے اختتام تک مجموعی طور پر 23.60 ارب ڈالر کے غیر ملکی قرضے حاصل کرچکی ہے۔اسٹیٹ بنک کے اعدادو شمار کے مطابق جولائی تا نومبر 2020 ء کے دوران براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری میں 17 فیصد کمی واقع ہوئی چین اور ناروے نے اس دوران 7 کروڑ 84 لاکھ ڈالر اور 5 کروڑ 58 لاکھ ڈالر کی سرمایہ کاری واپس لے لی۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی نے وعدہ کیا تھا کہ ایف بی آر کو ایک خود مختیارادارہ بنایا جائے گاجو کہ ہر قسم کے حکومتی اثرورسوخ سے آزاد ہوگا لیکن ڈھائی سال کے عرصہ میں حکومتی فیصلوں اور معاشی ٹیم کی مسلسل تبدیلیوں کے باعث قومی محصولات  خاطر خواہ ترقی سے کوسوں دور دکھائی دیتے ہیں موجودہ مالی سال 2020.21 تک کل 6 ارب 50 کروڑ انکم تیکس وصول کیا جبکہ گزشتہ سال کے اس عرصہ میں 12 ارب 80 کروڑ وصول ہوا اس اعتبار سے رواں مالی سال انکم ٹیکس وصولیوں میں 49.2 فیصد خسارہ ہوایعنی انکم ٹیکس گوشوارے بھی 23 فیصد کم وصول ہوئے ہیں۔انہوں نے مذید کہا کہ ملک میں 70 لاکھ نوجوان منشیات کی لعنت کا شکار ہے خود وزیر عظم نے انٹی نارکوٹیکس فوری کے ہیڈ کوارٹر میں اس بات کو اپنے خطاب میں تسلیم کیا 21 دسمبر 2020 ء کو خود وزیر اعظم نے اپنی اور اپنی ٹیم کی نااہلی کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی سیاسی جماعت کو تیاری کے بغیر حکومت میں نہیں آنا چاہیے  انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی عوام کی حقیقی ترجمان ہے اور ہمارا ایمان ہے کہ ملکی مسائل کا حل اسلامی نظام کے نفاذ میں ہی ہے۔ جماعت اسلامی آئے گی تو قرآن و سنت کی روشنی میں سرمایہ دارانہ اور سودی نظام کا خاتمہ کریں گے۔ کشمیر کی آزادی کیے لیے فیصلہ کن اور نتیجہ خیز اقدامات کیے جائیں گے۔ عوام کو تعلیم و صحت کی بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں گی۔

مہنگائی ڈبل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -