مخدوم ہاشم جواں بخت کا مختلف علاقوں کا دورہ‘ متعدد منصوبوں کا افتتاح

 مخدوم ہاشم جواں بخت کا مختلف علاقوں کا دورہ‘ متعدد منصوبوں کا افتتاح

  

رحیم یار خان (بیورو رپورٹ) وزیر خزانہ پنجاب مخدوم ہاشم جواں بخت نے رحیم یار خان کا دورہ کیا جہاں انہوں نے میانوالی قریشیاں،ظاہر پیر اورتحصیل خانپور میں مختلف(بقیہ نمبر49صفحہ 7پر)

 منصوبہ جات کا افتتاح کیااور جاری منصوبہ جات میں پیش رفت کا جائزہ لیا۔ میانوالی قریشیاں میں رورل ہیلتھ سینٹر کی اپ گریڈیشن کے منصوبہ کاسنگ بنیاد رکھتے ہوئے صوبائی وزیر نے بتایا کہ رورل ہیلتھ سینٹر میں تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال کی سطح کی سہولیات مہیا کی جائیں گی۔منصوبہ ایک سال کی مدت میں مکمل کیا جائے گا جس پر 30کروڑ سے زائد لاگت آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں میانوالی قریشیاں کے عوام کو جن بنیادی سہولیات سے محروم رکھا گیا موجودہ حکومت ان تمام سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنائے گی۔ میانوالی قریشیاں سے صوبائی وزیر ظاہر پیر روانہ ہوئے جہاں انہوں ٹاو ن کمیٹی کا دورہ کیا او ر علاقے میں نو تعمیر شدہ ریسکیو سٹیشن 1122اور سیوریج و سڑکوں کی تعمیر و بحالی کے منصوبوں کا افتتاح کیا اور میونسپل کمیٹی کو فراہم کردہ جدید مشینری کا جائزہ لیا۔ اس موقع پر علاقہ عمائدین سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے بتایا کہ ظاہر پیر میں 40کروڑ سے زائد کی لاگت کے یہ منصوبے علاقہ مکینوں کی فوری ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے منتخب کیے گئے ہیں۔علاقے میں سیوریج کا بہترین سسٹم صفائی ستھرائی کے ساتھ بیماریوں سے تحفظ کو یقینی بنائے گا۔ ریسکیو سٹیشن کی موجودگی سی پیک اور دیگر شاہرات پر حادثات کا شکار ہونے والوں کو فوری طبی امداد کی فراہمی کو یقینی بنائے گی۔ صوبائی وزیر نے علاقہ عمائدین کو ظاہر پیر میں شیخ زیدہسپتال اینڈ میڈیکل کالج کے ہب اینڈ سکوپ پروگرام کے تحت جدید ٹراما سینٹر کے قیام کی خوشخبری بھی سنائی۔ خانپور میں وزیر خزانہ پنجاب نے 70کروڑ سے لاگت کے جاری و مکمل منصوبہ جات کا جائزہ لیا ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے صوبائی وزیر کو موقع پر تمام منصوبہ جات بارے تفصیلی بریفنگ دی۔ ڈپٹی کمشنر علی شہزاد صوبائی وزیر کے دورہ رحیم یار خان میں مسلسل ان کے ہمراہ رہے اور انھیں ضلعی مسائل سے آگاہ کرتے رہے۔ خانپور میں 63کروڑ کی لاگت سے زیر تعمیر کیڈٹ کالج کے منصوبہ پر کام کی رفتار پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے انتظامیہ کو ہدایت کی کہ کالج میں اسی سال میں کلاسز کے آغازکو یقینی بنائیں۔ تدریسی سہولیات کے ساتھ صحتمند اور صاف ستھرے ماحول کی فراہمی کے لیے احاطے کے اندر اور احاطے سے باہر شجر کاری کو یقینی بنایا جائے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ مختلف منصوبہ جات پر لگنے والا سرمایہ عوام کی امانت ہے جو وہ ٹیکس کی شکل میں ادا کرتے ہیں۔ فنڈ کے ناقص استعمال یا ضیاع کو ہر گز برداشت نہیں کیا جائے گا۔ خانپور میں صوبائی وزیر نے الطاف آئی ہسپتال پر پیش رفت کا بھی جائزہ لیا۔ ہسپتال کی انتظامیہ کی جانب سے آئی سرجنز کی فراہمی کی درخواست پر فوری بھرتی کی ہدایات جاری کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے کہا کہ ڈاکٹر کی حاضری کے بغیر ہسپتالوں کی تعمیر کوئی معانی نہیں رکھتی۔ پسماندہ علاقوں میں ڈاکٹرز کی حاضری کو یقینی بنانے کے لیے فوری اقدامات کئے جائیں گے۔ صوبائی وزیر نے خانپور کے عوام کو آنکھوں کے ہسپتال کوایک ماہ کے اندر فعال کرنے کی خوشخبری بھی سنائی۔ اس موقع پر میڈیا نمائندگان سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے بتایا کہ حکومت پنجاب آئندہ مالی سال میں 50ارب کی لاگت سے صحت کے ایک بڑا پروگرام شروع کرنے جا رہی ہے جس سے پنجاب کے 11کروڑ عوام مستفید ہوں گے۔ یونیورسل ہیلتھ انشورنس پروگرام کے تحت ہر شہری کو 5سے10لاکھ روپے کی ہیلتھ انشورنس مہیا کی جائے گی جس سے وہ صحت کی تمام سہولیات حاصل کر سکے گا۔ منصوبہ سے قبل تمام اضلاع میں صحت کی سہولیات کی اپ گریڈیشن کا عمل جاری ہے۔ رحیم یار خان میں شیخ زید سرجیکل ٹاور کا قیام اور روڈ انفراسٹریکچر کی فراہمی بھی اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت ماضی کے برعکس میگا پروجیکٹس کی بجائے تمام اضلاع میں دیہی اور شہری آبادی کی ضروریات کے مطابق بنیادی سہولتوں کی فراہمی کویقینی بنا رہی ہے۔ موجودہ حکومت کا ترجیحی ایجنڈہ صوبے کے محروم عوام کی داد رسی ہے جسے پی ڈی ایم جیسی کھوکھلی تحریکیں نقصان نہیں پہنچا سکتیں۔

ہاشم جواں 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -