شہبازشریف سے اظہار یکجہتی کیلئے لیگی رہنماؤں کی احتساب عدالت آمد

  شہبازشریف سے اظہار یکجہتی کیلئے لیگی رہنماؤں کی احتساب عدالت آمد

  

لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت میں میاں شہباز شریف اور حمزہ شہباز سے اظہار یکجہتی کیلئے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ سعد رفیق، خرم دستگیر،طلال چودھری،رانا ثناء اللہ اور عظمیٰ بخاری سمیت دیگر بھی موجود تھے،اس موقع پر مذکورہ رہنماؤں نے میاں شہباز شریف سے سینیٹ الیکشن اور بلدیاتی انتخابات کے متعلق اہم امور پر بات چیت کی،اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رانا ثناء اللہ نے کہا کہ میاں شہباز شریف پارٹی صدر ہیں لاہور کے ارکان اسمبلی کو ان کی پیشی پر آنا چاہیے،ارکان سے متعلق اجلاسوں میں بات کی ہے،اجلاسوں میں بتایا گیا کہ پیشیوں پر ارکان اسمبلی نہیں آتے،اگر کس رکن اسمبلی کی مجبوری ہو وہ تو ٹھیک ہے لیکن دیگرکو آنا چاہیے،مسلم لیگ (ن) کے رہنماعطا تارڑ نے کہا کہ جو نیب کی جانب سے جو جرمانہ ہوا ہے اس کی پوچھ گچھ کون کرے گا اس لاہور شہر میں کوڑے کے ڈھیر بنا دیئے ہیں آٹے کا مافیا ہے چینی کا مافیا ہے،ادویات کا بھی یہی حال ہے،عظمیٰ بخاری نے کہا کہ عمران کی کوئی کام نہیں لیکن اثاثہ کروڑوں روپے کے ہیں نیب کی جو کارگردگی لندن ہائیکورٹ کے حوالے سے ہے اس کابتائیں شہزاد اکبر،اس پورے کیس میں تین فریق تھے نیب تھی حکومت پاکستان تھی اور بروڈ شیٹ کمپنی تھی اس میں جرمانہ صرف نیب کو ہوا،آپ سیاسی لوگوں کو اندر ڈال دیتے ہو اور بعد میں کانفرنس کرتے ہیں اگر اس ملک میں کوئی ادارہ ہے تو نیب کے نام سے غبن ہو رہا ہے اس کو کون پوچھے گا،وزیر اعلیٰ صاحب آپ نوٹس نہ لیں،اگر کوئی ادرہ ہے تو عمران خان اور شہزاد اکبر کااحتساب کرے،طلال چودھری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خود پرخاتون کے بھائیوں کی جانب سے کیا گیا تشدد کے ذمہ دار حکومت کو قرار دے دیا،انہوں نے مزید کہا کہ حکومت اس قدر گر چکی ہے کہ وہ خواتین کے ذریعے مخالفین پر وار کررہی ہے،میرے اوپر تشدد میں بھی مخالفین کے ہاتھ ملوث تھے،میرے تشدد پر پارٹی اور میرا موقف سامنے ہے،جس دن پی ڈی ایم مارچ کرے گی اس دن کس کی فیئر ویل کا دن ہوگاجس کا فیئر ویل ہوگا وہ جانتا ہے چائے پلانی ہے یا کھانا کھلانا ہے۔

لیگی رہنما

مزید :

صفحہ آخر -