وفاق حکومت کے اتحا د کابینہ سے نکل کر عوام کا ساتھ دیں: مرا د علی شا ہ

وفاق حکومت کے اتحا د کابینہ سے نکل کر عوام کا ساتھ دیں: مرا د علی شا ہ

  

 کراچی(اسٹاف رپورٹر)وزیراعلی سید مراد علی شاہ نے گیس بحران پر وفاقی حکومت پر سخت تنقید کرتے ہوئے وفاقی حکومت کے اتحادیوں جی ڈی اے اور ایم کیوایم پر زور دیا ہے کہ وہ عوامی مسائل پر وفاقی کابینہ سے نکلیں اور سندھ کے لوگوں کا ساتھ دیں۔منگل کو سندھ اسمبلی میں گیس بحران پر پالیسی بیان دیتے ہوئے وزیر اعلی سندھ کا کہنا تھا کہ سندھ کے لوگوں کیساتھ کھڑے ہونے میں قربانی دیناپڑتی ہے مجھے پتہ ہے آپ حکومت سے نہیں نکل سکتے کیونکہ آپ کو چلانے والا کوئی اور ہے۔وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ وفاقی حکومت نے صنعتکاروں کی حالت خراب کردی ہے۔ سندھ میں گیس موجود ہے اور انکا حق ہے ان کی صنعتوں کو گیس دی جائے مگر پھر بھی نہیں دی جارہی۔مراد علی شاہ نے کہا کہ گیس پر سندھ کے لوگوں کا پہلا حق ہے۔وفاقی حکومت سندھ کا حق مار رہی ہے۔ وزراعلی سندھ نے فردوس شمیم نقوی کا نام لئے بغیر یاد دلایا کہ ستمبرکے مہینے میں کسی نے شرم وحیا یاددلائی تھی۔انہوں نے کہا کہ انہوں نے دسمبرمیں وزیراعظم کوخط لکھا تھا،ان کے لوگ ان کو گمراہ کررہے ہیں۔انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ وزیراعظم کوخط لکھاتھا جواب محکمہ پاورکی طرف سے دیا گیا۔انہوں نے کہا کہ ہم نے سندھ کے لئے 1600ایم ایم سی ایف ڈی گیس مانگی ہے اس ضمن میں انہوں نے آئین کے آرٹیکل 158کاحوالہ دیا اور کہا کہ ہم نے لکھا کہ وفاقی حکومت کی پالیسیزقانون کے مطابق نہیں ہے۔ وزیراعلی مرادعلی شاہ کی تقریر پر فردوس شمیم نے اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے اسپیکر سے کہا کہ ایوان میں میرا نام لیاگیا مجھے جواب دینے کا حق دیں آپ جمہوریت پر یقین رکھتے ہیں تو بات کرنے دیں۔ جس پر اسپیکر آغا سراج نے کہا کہ یہاں جمہوریت کی بات نہیں قواعد کی بات ہے اورآپ مجھے ڈکٹیٹ نہیں کرسکتے۔اپوزیشن لیڈر کو بات کرنے کی اجازت نہ دیئے جانے پر حزب اختلاف کے ارکان نے ایوان میں شورشرابہ اور ہنگامہ شروع کردیا۔اپوزیشن ارکان نے صوبائی وزیر تیمور تالپور کے ریمارکس پر بھی احتجاج کیا۔

مزید :

صفحہ اول -