فوج سیاست سے الگ ہو گئی؟ آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی نے وزیراعظم کو کیا پیغام پہنچایا؟ سینئر صحافی نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا

فوج سیاست سے الگ ہو گئی؟ آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی نے وزیراعظم کو کیا ...
فوج سیاست سے الگ ہو گئی؟ آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی نے وزیراعظم کو کیا پیغام پہنچایا؟ سینئر صحافی نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )سینئر صحافی امتیاز عالم نے دعویٰ کیاہے کہ آئی ایس پی آر کی بریفنگ ایسے وقت میں آئی ہے جب عمران خان کی آرمی چیف اور آئی ایس آئی چیف سے دو ملاقاتیں ہوئیں اس کے بعد میجر جنربابرافتخار نے پریس کانفرنس کی ، میری رائے میں فوج نے ہاتھ کھڑے کر دیئے ہیں کہ ہمارا سیاست سے کوئی تعلق نہیں ، آپ جانیں اور سیاستدان جانیں ۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابرافتخارکی پریس کانفرنس پر تجزیہ کرتے ہوئے سینئر صحافی اور کالم نگار امتیاز عالم نے یوٹیوب چینل پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن نے جو مہم چلائی تھی اس سے کافی اثر پھیلاہے ، کچھ لوگ بتاتے ہیں کہ فوج میں غصہ پایا جاتاہے کہ جب ملک میں براہ راست مارشل نہیں ہے اور ایک منتخب حکومت ہے تو فوج کو آپ کیوں بیچ میں گھسیٹ رہے ہیں ، ایک صفحے والی بات میں فرق پڑاہے ، فوج کیوں پارٹی بنے سیاستدانوں کی لڑائی میں؟ اگر عمران خان احتساب کے نام پر اپنے مخالفین کو انتقام کا نشانہ بنا رہے ہیں تو فوج کا یہ ایجنڈا نہیں ہو سکتا ، ان کا کسی سے کوئی ذاتی مسئلہ نہیں ہے ، بار بار جس طریقے سے مولانا فضل الرحمان اور نوازشریف نے آرمی چیف اور آئی ایس آئی چیف پر تنقید کی کہ یہ سلیکٹر ہیں ، فوج نے ان بیانات کا بہت اچھا جواب دیاہے اور بردباری کا مظاہرہ کرتے ہوئے ٹھنڈے دل کا مظاہرہ کیاہے ۔

گزشتہ جمعہ کو عمران خان کی آرمی چیف اور آئی ایس آئی چیف سے ملاقات کھلے آسمان تلے لان میں ہوئی اور پھر گزشتہ روز اسی جگہ پر تینوں شخصیات کے درمیان دوبارہ بات ہوئی اس کے بعد آئی ایس پی آر کی یہ بریفنگ آتی ہے ، میں یہ قیاس کرسکتا ہوں کہ غالباً فوج نے ہاتھ کھڑے کر دیئے ہیں کہ ہمارا سیاست سے کوئی تعلق نہیں ہے ، ہم باہر ہیں ، آپ جانے ،سیاستدان جانیں ، ادارے موجود ہیں ، جائیں اور اپنا معاملہ حل کریں ۔

اپوزیشن نے ڈی جی آئی ایس پی آر کے بیان کو سنجیدہ لیاہے ، انہوں نے کوئی سیاسی بات نہیں کی ، فوج کے بارے میں جو باتیں کی جارہی تھیں ، انہوں نے کہا کہ یہ کام حکومت کا ہے وہ جواب دیں گے ۔شاہد خاقان عباسی اس وقت لندن میں ہیں ، وہاں بڑی اہم ملاقات ہوئی، شاہد خاقان کی نوازشریف کے درمیان بات چیت ہوئی ہے ، کورونا وائر س کے باعث کہا جارہاہے کہ ملاقات نہیں ہو سکی لیکن وہاں پر انہوں نے ٹیلیفون پر بیٹھ کر گھنٹوں بیٹھ کر بات کی ہے ، ان کے پاس یقینا ایسا پیغام تھا کہ فوج میں اب یہ رائے بنی ہے اس لیے اب ہمیں فوج کو بیچ میں نہیں لانا چاہیے ۔

ویڈیو دیکھیں:

مزید :

قومی -