براڈ شیٹ کیس کا معاملہ ،مسلم لیگ ن کھل کر میدان میں آ گئی ، ایک ایک بات کا جواب دیتے ہوئے حکومت پر سنگین الزام عائد کردیئے

براڈ شیٹ کیس کا معاملہ ،مسلم لیگ ن کھل کر میدان میں آ گئی ، ایک ایک بات کا جواب ...
براڈ شیٹ کیس کا معاملہ ،مسلم لیگ ن کھل کر میدان میں آ گئی ، ایک ایک بات کا جواب دیتے ہوئے حکومت پر سنگین الزام عائد کردیئے

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ  نیب اور براڈ شیٹ کے درمیان کوئی سرکاری معاہدہ نہیں،سوال پوچھے جائیں تو سلیکٹڈ وزیراعظم براڈشیٹ کا ٹویٹ کرتا ہے،براڈ شیٹ کا ٹویٹ تو آپکے خلاف چارج شیٹ ہے،برطانوی فرم براڈ شیٹ نے نیب نیازی گٹھ جوڑ اور پرویز مشرف کا منہ کالا کر دیا ہے،سلیکٹڈ وزیراعظم نےاپنے سیاسی مخالفین کو بھی واسطہ دینے کی کوشش کی کہ آئیں سب ملکر براڈ شیٹ کی بات کرتے ہیں،پاکستانی تاریخ کی سب سے بڑی منی لانڈرنگ تو آج ہو رہی ہے،شہزاد اکبر کے مذاکرات کو پبلک کیا جائے، کتنا کمیشن لیا گیا؟ تحقیقات کی جائیں۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مریم اورنگزیب نے کہا کہ  براڈ شیٹ نے فرسودہ نظام کو بے نقاب کیا ہے، آمرانہ نظام کے ذریعے منتخب وزیراعظموں کے خلاف سازش ہوتی رہی، براڈ شیٹ کمپنی سے کہا گیا کہ نواز شریف کے خلاف کیس بنائے جائیں، کمپنی کو مقدمہ بنانے کے لیے سیاسی حریفوں کی لسٹ دی گئی، مشرف کی کابینہ کا حصہ بننے والوں کو لسٹ سے نکالنے کا حکم دیا گیا، کچھ نیب زادے بنے اور کچھ نیب زدہ بنے،معاملہ ملک کے سلیکٹڈ وزیراعظم کے این آر او کے بھیک مانگنے کا ہے جو اُنہوں نے آج صبح ٹویٹ کے ذریعے میڈیا کو بھی واسطہ دیا اور اپنے سیاسی مخالفین کو بھی واسطہ دینے کی کوشش کی کہ آئیں سب ملکر براڈ شیٹ کی بات کرتے ہیں،پرویز مشرف نے پاکستانی 6سو کروڑ روپے ایک پرائیویٹ فرم کو دیئے جو اس وقت 6مہینے پہلے رجسٹر ہوئی تھی اور وہ 6سو کروڑ اس لیے دیئے گئے تاکہ اس وقت کے منتخب وزیراعظم کے خلاف مقدمہ بناؤ،پرویز مشرف  نے 600 کروڑ اپنی جیب سے نہیں دیے، آمر نے عوام کے پیسے کو جمہوریت کے خلاف استعمال کیا۔

ن لیگی ترجمان نے کہا کہ اس وقت کیونکہ پرویز مشرف کو یہ پتہ تھا کہ میں نے جھوٹ بول کر جعل سازی کرکے ایک جعلی کمپنی کو جو 6مہینے پہلے رجسٹر ہوئی تھی کو نوازشریف کے خلاف استعمال کیا تو پرویز مشرف نے بھی 400کروڑ روپے جو کلیم ہے براڈ شیٹ کا اس کو نہیں دیا،اگر تھوڑی دیر کیلیےمان بھی لیا جائے تو وہ یہ بھی کہہ رہا ہےکہ ایک جنرل بھی مذاکرات میں شامل تھا اور وہ کہہ رہا ہے ہمیں اس میں سےکتناحصہ دوگے؟نیب کی فائلوں کا پیٹ بھرنےکیلیے روز کہاجاتا ہے کہ اتنےارب کی ریکوری ہوگئی ہےتو وہ ریکوری نیب نیازی گٹھ جوڑکےپرائیویٹ اکاونٹس میں جارہی ہے،پہلے اس آمر نے 6سو کروڑ کا نقصان پہنچایا آج عمران صاحب نے 4سو پچاس کروڑ روپے ادا کیے کیونکہ آج بھی ایک آمرانہ سوچ ملک کے اوپر مسلط ہے۔

اُنہوں نے کہا کہ براڈ شیٹ نے کہا شریف فیملی نے رابطہ نہیں کیا، نیب اور براڈ شیٹ کا کوئی معاہدہ نہیں تو شریف فیملی کیوں رابطہ کرے گی؟پہلے مشرف نے نقصان پہنچایا ، اب عمران خان نے 450 کروڑ روپے دیے،آج شہزاد اکبر کی طرف سے یہ مذاکرات کیے جارہے ہیں ہم ملک کا پیسہ آپکو ادا کرتے ہیں آپ ہمیں کتنا حصہ دینگے؟شہزاد اکبر نے عمران خان کےحکم پربراڈ شیٹ کے ساتھ مذاکرات کیے، نیب اور براڈ شیٹ کے درمیان کوئی سرکاری معاہدہ نہیں ہے،یہ وہ مافیا ہے جو وزیراعظم کے دائیں اور بائیں بیٹھ کر ملک کو لوٹ رہا ہے۔

مریم اورنگزیب نے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ شہزاد اکبر کے مذاکرات کو پبلک کیا جائے، کتنا کمیشن لیا گیا؟ تحقیقات کی جائیں،پاکستانی تاریخ کی سب سے بڑی منی لانڈرنگ تو آج ہو رہی ہے،سٹیٹ بینک پی ٹی آئی کے 23 فارن فنڈنگ کیس غیر قانونی قرار دے چکا ہے، 14 ہزار ارب روپے قرض لیا گیا جو منی لانڈر کر دیا گیا، علیمہ باجی کی سلائی مشین اربوں روپے کے کپڑے سیتی ہے، کرسی پر بیٹھ کر این آر او کی تلاش عمران خان کر رہے ہیں، ہم آپ کے استعفی کا مطالبہ کرتے ہیں۔

مزید :

قومی -