عدالتی حکم کے باوجود مشرف کیخلاف مقدمہ درج نہ ہوسکا

عدالتی حکم کے باوجود مشرف کیخلاف مقدمہ درج نہ ہوسکا
عدالتی حکم کے باوجود مشرف کیخلاف مقدمہ درج نہ ہوسکا

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) اسلام آباد ہائی کورٹ کے حکم کے باوجود تھانہ آبپارہ کی پولیس نے سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف لال مسجد آپریشن میں عبد الرشید غازی اور ان کی والدہ کے قتل کا مقدمہ درج کرنے سے انکار کردیا ہے۔ شہدا فاو¿نڈیشن ٹرسٹ کے ترجمان حافظ احتشام احمد کے مطابق انہوں نے ہفتہ کی صبح تھانہ آبپارہ کے ایس ایچ او سے رابطہ کرکے ان سے درخواست کی کہ عدالتی حکم کے مطابق عبد الرشید غازی کے بیٹے ہارون رشید غازی آج تھانے آکر پرویز مشرف کے خلاف اپنے والد اور اپنی دادی کے قتل کے مقدمے کے اندراج کے لئے بیان ریکارڈ کرانا چاہتے ہیں مگرتھانہ آبپارہ کے ایس ایچ او غلام قاسم نیازی نے بیان ریکارڈ کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ انہیں اب تک ہائی کورٹ کے حکم کی تحریری کاپی نہیں ملی لہٰذا وہ مقدمہ درج نہیں کرسکتے۔حافظ احتشام احمد نے کہا کہ تھانہ آبپارہ کی پولیس اسلام آباد ہائی کورٹ کے واضح احکامات کے باوجود جانبداری کا مظاہرہ کررہی ہے اور اگر تھانہ آبپارہ کے ایس ایچ او کی جانب سے پرویز مشرف کے خلاف مقدمے کے اندراج میں تاخیر کی گئی تو یہ توہین عدالت ہوگی۔

مزید : اسلام آباد