بنگلہ دیش میں چار افراد نے رکشہ چوری کے الزام میں 13سالہ بچے کو تشدد کا نشانہ بنا کر مار ڈالا

بنگلہ دیش میں چار افراد نے رکشہ چوری کے الزام میں 13سالہ بچے کو تشدد کا نشانہ ...
بنگلہ دیش میں چار افراد نے رکشہ چوری کے الزام میں 13سالہ بچے کو تشدد کا نشانہ بنا کر مار ڈالا

  

ڈھاکہ (مانیٹرنگ ڈیسک)بنگلہ دیش کے کمارگاﺅں کے علاقے سہلت صدر سے 13سالہ بچے کو رکشہ چوری کرنے کے الزام میں چار افراد نے تشدد کا نشانہ بنا کر مار ڈالا ۔

تفصیلات کے مطابق سیمول عالم راجن پرائمری سکول میں چوتھی جماعت کا طالب علم تھا اور اس کا باپ رکشا ڈرائیور ہے اور چار با اثر افراد نے بچے پر رکشہ چور ی کا الزام لگا کر اسے ڈنڈے مارے جس کے باعث معصوم بچہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے موقع پر ہی دم توڑ گیاہے ۔ویڈیو میں بچے کو پو ل کے ساتھ باندھ رکھاہے اور ایک شخص نے ڈنڈا اٹھا رکھاہے اور وہ بچے سے کہہ رہاہے کہ مان جاﺅ کے تم رکشہ چوری میں ملوث ہو ،اور بچے کے انکار پر وہ اسے ڈنڈوں سے پیٹتا ہے ۔

گاﺅں کے رہنے والے علاقہ مکینوں نے اپنی مدد آپ کے تحت 22سالہ موہت عالم کو اس وقت پکڑ کر پولیس کے حوالے کر دیا جب وہ راجن کی لاش کو بس میں چھوڑنے کیلئے جار رہاہے ۔پولیس نے عالم کو گرفتار کر کے مقدمہ درج کرلیاہے اور تفتیش شروع کر دی ہے ۔ 13سالہ راجن کے قتل میں موہت کے علاوہ اس کے 24سالہ کمرول اسلام ،34سالہ علی حیدر اور 45سالہ موئنا میا بھائی بھی شامل ہیں۔

ویڈیو سے قبل اشتہارات کیلئے معذرت خواہ ہیں 

مزید : بین الاقوامی /اہم خبریں