انیس سو ستر سے 597 بااثر خاندان حکومت و سیاست پر قابض ہیں : رپورٹ

انیس سو ستر سے 597 بااثر خاندان حکومت و سیاست پر قابض ہیں : رپورٹ
انیس سو ستر سے 597 بااثر خاندان حکومت و سیاست پر قابض ہیں : رپورٹ

  

اسلام آباد (آن لائن) پاکستان میں 1970ءسے اب تک 597 بااثرخاندان حکومت پر قابض چلے آرہے ہیں، ان خاندانوں میں سے 379 کا تعلق پنجاب سے، 110 کا سندھ، 55 کا کے پی کے، 45کا بلوچستان جبکہ 7 کا تعلق وفاق کے زیرانتظام قبائلی علاقوں سے ہے۔ 1970ءمیں 3300 قومی، صوبائی اسمبلیں اور سینیٹ کی نشستوں پر 597 خاندان کے افراد براجمان تھے، 1977ءمیں یہ شرح 37 فیصد 1993ءمیں 50 فیصد جبکہ جنوبی پنجاب میں اب یہ شرح 64 فیصد تک جاپہنچی ہے۔

ایک رپورٹ کے مطابق بلوچستان میں اب یہ شرح 44 فیصد، سندھ میں 41 فیصد، کراچی میں 9 فیصد، کے پی کے میں 28فیصد اور فاٹا میں 18 فیصد تک جاپہنچی ہے۔ 1990ءکے نگران وزیراعظم غلام مصطفیٰ جوتئی کے 11 افراد مختلف اسمبلیوں میں رہے۔ 2008ءمیں جتوئی کے 4 بیٹے ملک کے تینوں قانون ساز اداروں میں موجود تھے۔ بااثر سیاسی خاندانوں میں لغاری، کھوسہ، خان سید، بگٹی، مرزا، چوہدری، مزاری، زداری، مروت، شریف، بھٹو اور دیگر خاندان شامل ہیں، موجودہ وزیراعظم نواز شریف کے خاندان کے کئی افراد حکومت میں ہیں جن میں اسحق ڈار، حمزہ شہباز، مریم نواز، کیپٹن (ر) صفدر اور دیگر شامل ہیں، چوہدری ظہور الہٰی کے خاندان سے چوہدری شجاعت، پرویز الہٰی، مونس الہٰی، شفاعت حسین، لغاری خاندان مین سے فاروق لغاری، اویس لغاری، سمیرا ملک، عائلہ ملک، مینا لغاری، جمال خان لغاری، رفیق حیدرلغاری،محمد خان لغاری، محسن لغاری، یوسف لغاری شامل ہیں، کھر خاندان کے بہت سے لوگ حکومت میں رہے ہیں، زرداری خاندان سے فریال تالپور سمیت کئی لوگ حکومت میں آئے ہیں۔

مزید : اسلام آباد