آئی ایم ایف کے مطالبے پر بجلی وگیس کی قیمتوں میں اضافہ تباہ کن ہوگا: پیاف

آئی ایم ایف کے مطالبے پر بجلی وگیس کی قیمتوں میں اضافہ تباہ کن ہوگا: پیاف

لاہور( کامرس رپورٹر) پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسو سی ایشنز فرنٹ(پیاف) نے اگلے ماہ سے آئی ایم ایف کے مطالبے پر بجلی و گیس کی قیمتوں میں اضافے کے فیصلہ کو انڈسٹری کے لیے تباہ کن قرار دیا ہے۔ چیئرمین پیاف عرفان اقبال شیخ نے سیئنر وائس چیئر مین تنویر احمد صوفی اور وائس چیئر مین خواجہ شاہ زیب اکرم کے ہمراہ بجلی و گیس کی قیمتوں میں اضافہ کی خبروں پر تشولش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ صنعتی و کمرشل مقاصد کے لئے بجلی و گیس کی قیمتوں میں اضافہ صنعتوں کو بحران میں مبتلا کر دے گا اور اس کا بالواسطہ اثر عوام پر پڑے گا کیونکہ انڈسٹریز کی پیداواری لاگت میں اضافہ ہو جائے گاجبکہ انڈسٹری اس کی متحمل نہیں ہوسکتی۔

انھوں نے کہا کہ آئی ایم ایف کی رپورٹ میں گیس کی قیمتوں کا تعین ماہانہ بنیاد پر کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔ عرفان شیخ نے کہا کہ بجلی و گیس کی قیمتوں کا تعین سال میں صرف ایک بار کیا جانا چاہیے ۔ قیمتوں میں ماہانہ کا ردو بدل پیداواری عمل کو متاثر کر سکتا ہے ۔ مہنگی بجلی و گیس کے باعث ملکی صنعتیں پہلے ہی مشکلات کا شکار ہیں اور اشیاء کی پیداواری لاگت میں اضافہ سے ملکی برآمدات میں مسلسل کمی کا سامنا ہے جس سے زرمبادلہ کے ذخائر میں بھی کمی واقع ہورہی ہے عرفان اقبال شیخ نے زرعی شعبہ میں بجلی کی قیمتوں میں 3روپے سے زائد کمی کے نوٹیفکیشن کو سراہتے ہوئے مطالبہ کیا کہ زرعی شعبہ کی طرح صنعتی شعبہ میں بھی بجلی کی قیمتوں میں3روپے یونٹ کے حساب سے کمی کی جائے تاکہ صنعتی شعبہ جو بجلی کی قیمتوں میں اضافہ سے دباؤکا شکار ہے اس شعبہ کو بھی ریلیف مل سکے۔پیاف کے سینئر وائس چےئرمین تنویر احمد صوفی نے کہا کہ پاکستان میں پیداوری لاگت اپنے ہمسایہ ممالک( انڈیا، تھائی لیند ،چین، بنگلہ دیش وغیرہ ) کے مقابلے میں پہلے ہی بہت زیادہ ہے۔ بجلی و گیس کی قیمت میں مجوزہ اضافہ سے پاکستان مقابلے کی دوڑسے باہر ہو جائے گا۔ اور اپنے مقامی و بین الاقو امی آرڈرز بھی سے محرم ہوجائے گا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان بین الاقوامی مارکیٹ میں ان ممالک سے اپنی مصنوعات کا مقابلہ نہیں کرپا رہا اسی لیے ملکی برآمدات کمی کا شکار ہیں ۔ملکی برآمدات میں اضافہ کیلئے بجلی گیس کی قیمتوں میں اضافہ نہیں بلکہ کمی کی جائے تاکہ تجارتی خسارہ کم ہوسکے ۔تنویر صوفی نے کہا کہ گیس پاکستان کے قدرتی وسائل سے حاصل ہوتی ہے اور اس کی قیمت میں اضافہ بلا جواز ہے۔ پیاف کے وائس چےئرمین خواجہ شاہ زیب اکرم نے کہاحکومت کی جانب سے آئی ایم ایف کے مطالبہ پر آئندہ ماہ سے بجلی و گیس کی قیمتوں میں اضافہ سے صنعتوں پر اضافی بوجھ پڑے گا۔گیس کی قیمتوں میں اضافہ سے پیداواری لاگت میں اضافہ اور ملک میں مہنگائی بڑھے گی۔انہوں نے کہا کہ صنعتیں بجلی گیس کی لوڈ شیڈنگ اور ٹیکسوں میں اضافہ سے پہلے ہی متاثرہورہی ہیں اسی وجہ سے پچھلے مالی سال کیلئے جی ڈی بی کا ہدف بھی حاصل نہیں کیا جاسکا ہے ۔پیاف کے لیڈران نے حکومت سے ایپل کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگلے ماہ سے بجلی و گیس کی قیمتوں میں اضافہ نہ کیا جائے ۔

مزید : کامرس


loading...