کماد کے کاشتکار جدید زرعی سفارشات پر عمل سے 1500 سے 2ہزار من فی ایکڑ پیداوار حاصل کرسکتے ہیں، محکمہ زراعت

کماد کے کاشتکار جدید زرعی سفارشات پر عمل سے 1500 سے 2ہزار من فی ایکڑ پیداوار ...

فیصل آباد(بیورورپورٹ )محکمہ زراعت کے ترجمان نے کہاہے کہ کماد کے کاشتکار جدید زرعی سفارشات پر عمل کرکے اوسط 607 من فی ایکڑ کی بجائے 1500 سے 2ہزار من فی ایکڑ پیداوار حاصل کرسکتے ہیں جس کیلئے انہیں پیداوار پر اثر انداز ہونے والے عوامل سے بچاؤ کے ساتھ ساتھ فصل پر حملہ آور ہونے والے کیڑوں پر بھی کنٹرول یقینی بناناہوگا۔ محکمہ زراعت فیصل آبادکے ترجمان کاکہناہے کہ حملہ آور کیڑوں پر اگر بروقت کنٹرول کرتے ہوئے ان کا تدارک نہ کیا جائے تو یہ پیداوار میں بہت بڑی کمی کا سبب بنتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ کماد کے ان ضرر رساں کیڑوں میں دیمک، جڑ، تنے اور چوٹی کے گڑوویں/بورر، گرداسپوری بورر، گھوڑا مکھی، سفید مکھی اور مائٹس شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دیمک کے حملہ سے بچاؤاور سیاہ بگ کے تدارک کیلئے کھیت کی بروقت آبپاشی کی جائے اور فصل کو پانی کی کمی نہ آنے دی جائے۔

انہوں نے کہاکہ کاشتکار مزید معلومات و رہنمائی اور مشاورت کیلئے محکمہ زراعت کے فیلڈ سٹاف کی خدمات سے بھی استفادہ کرسکتے

مزید : کامرس


loading...