لنڈی کوتل کے عوام کا دیرینہ مسئلہ آب حل، گورنر اقبال ظفر جھگڑا نے 22کروڑ روپے کے منصوبہ آب نوشی کا افتتاح کردیا

لنڈی کوتل کے عوام کا دیرینہ مسئلہ آب حل، گورنر اقبال ظفر جھگڑا نے 22کروڑ روپے ...

خیبر ایجنسی (عمران شنواری )

لنڈیکوتل درہ خیبر پر ایک تاریخی علاقہ جس کی جغرافیا ئی حیثیت بھی مسلمہ ہے افغانستان کے ساتھ سرحد پر واقع ہونے کی وجہ سے بھی لنڈیکوتل کی اہمیت بہتہے یہ علاقہ پاک افغان شاہرا پر ہونے والی تجارتی سرگرمیوں کے حوالے سے بھی بہت اہمیت رکھتا ہے لنڈیکوتل پر ایک نظر ڈورائی جائے تو اس کے شمال میں دریا کابل جیسے پانی کے بڑے ذخیرے ہیں جبکہ اس کے جنوب میں وادی تیراہ جیسے خوبصورت اور زر خیز علاقے موجود ہیں لیکن پھر بھی لنڈیکوتل کے عوام پینے کے صاف پانی سے محروم ہیں لنڈیکوتل میں تین قومیں آباد ہیں۔ جن میں آفریدی شلمانی اور شینواری ہیں ۔ اور اس کے علاوہ افغانی مہاجر کافی تعداد میں ہیں لیکن پاکستان بننے کے بعد یہا ں پر کسی ایسے منصوبے پر کام نہیں کیا گیا جس سے لنڈیکوتل کے عوام کے لئے پینیکے صاف پانی کا بندوبست ہو سکے لنڈیکو تل کی کل آبادی تقریباًچارلاکھ کے قریب ہے ۔ دو ہزار پانچ ((2005میں اس وقت کے گورنر افتخار حسین شاہ نے لنڈیکوتل کے عوام کے لئے ایک بہت بڑے شلمان واٹر سپلائی منصوبے کا افتتاح کیا اور لنڈیکوتل کے دورافتادہ علاقہ انزری میں اس منصوبے کی تختہ کشائی بھی باقائدہ طور پر کی گئی لیکن وہ منصوبہ ناکامی سے دو چا ر ہوااس کے بعد لنڈی کوتل میں کسی بڑے منصوبے پر کام نہیں کیا گیالنڈی کوتل میں پانی کی شدید قلت کو دیکھتے ہوئے پولیٹیکل ایجنٹ خیبر خالد محمود نے طور خم لنڈی خانہ جہا ں پر پانی کے بڑے ذخائر موجود ہیں وہاں سے لنڈی کوتل کے لئے پانی پہنچانے کے لئے سروے کر کے رپورٹ تیار کی جس کے تحت منصوبہ ترتیب دیا گیا، جس کا باقاعدہ افتتاح گورنر خیبر پختونخوا اقبال ظفر جھگڑا نے گز شتہ روز لنڈیکوتل دورے کے موقع پر کیا اس منصوبے پر کل 22کروڑ لاگت آئے گی اور یہ ایک سال میں مکمل ہو جائے گاجس سے تقریبا 80فیصد علاقہ مستفید ہوگا گورنر نے واضح کیا کہ اگر اس منصوبے کے لئے اور رقم کی ضرورت پڑی تو وہ بندوبست کریں گے لیکن یہ منصوبہ ضرور مکمل کیا جائے گا ۔

گورنر اقبال ظفر جھگڑا نے پاک افغان بارڈر طورخم پر افغان فورسز کی فائرنگ سے زخمی ہونے والوں اور دہشتگردی میں زخمی اور شہدا میں چیک بھی تقسیم کئے اور طورخم بارڈر پر شہید میجر جواد چنگیز ی کے لواحقین کے لئے پانچ لاکھ روپے کا اعلان بھی کیاگورنر نے دورے کے موقع پر قومی مشیران اور میڈیا کے نمائندوں سے ملے اور ان سے تفصیلی بات چیت بھی کی گورنر خیبر پختونخوا اقبال ظفر جھگڑا نے لنڈی کوتل چھاؤنی میں ایک منتخب قبائلی عمائدین کے جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فاٹا میں تھری جی نیٹ سروس کی بندش کا فیصلہ ایپکس کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا تھا جس سے امن وامان کی صورتحال بہتر بنانے میں مدد ملے گی انہوں نے کہا کہ لنڈی کوتل میں عید الفطر کے موقع پر آمد طورخم اور دیگر علاقوں میں سویلین اور فوجی جوانوں کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرنا ہے جن کو پوری قوم سلام پیش کرتی ہے گورنر اقبال ظفر جھگڑا نے کہاکہ قبائلی عوام مشکل اور تکلیف دہ دور سے گزر چکے ہیں اور وزیر اعظم نواز شریف نے متعلقہ فریقین کے ساتھ پہلے مذاکرات کئے جو ناکام رہے اور پھربر وقت ضرب عضب آپریشن کا فیصلہ کر کے پورے ملک اور فاٹا کو محفوظ بنا دیا اور اب قبائلی عوام بلاخوف وخطر زندگی گزار رہے ہیں لیکن ابھی مزید کچھ صفائی باقی ہے انہوں نے کہا کہ لنڈی خانہ چارباغ سے 22کروڑ روپے کی لاگت سے صاف پانی کا ایک میگا منصوبہ تیار کیا گیا ہے جو ایک سال میں مکمل ہوگا جس سے لنڈی کوتل کی 80% آبادی کو صاف پانی کی سہولت میسر آئیگی اور اس منصوبے کا کریڈیٹ پی اے خیبر خالد محمود کو جاتا ہے، گورنر نے عمائدین کی زبانی علاقے کے مسائل سے آگاہی حاصل کی ، ملک دریا خان، ملکزادہ ندیم خان ، ملک محمد علی اور ملک غفار وغیرہ نے گورنر کو بے گھر افراد کے واپسی ، بحالی م لوڈ شیڈنگ ، نان کسٹم پیڈگاڑیوں کی رجسٹریشن ، طورخم کاروبار، پریس کلب کی تعمیر اور خاصہ دار فورس کی مراعات میں اضافے کے مطالبات کئے طورخم لنڈی خانہ واٹرسپلائی منصوبے پر قومی مشیران ملک خالد خان آفریدی اور ملک عبدالرزاق آفریدی نے خوشی کا اظہار کیاکہ لنڈیکوتل کے عوام کا سب سے بڑا مسئلہ پینے کی صاف پانی کاہے۔

مزید : ایڈیشن 2


loading...