کسانوں کو گنے کی رقم کی ادائیگی کیلئے ہائیکورٹ کا برادر شوگر مل کی چینی کا ستاک فروخت کرکے رقم عدالت میں جمع کرانے کا حکم

کسانوں کو گنے کی رقم کی ادائیگی کیلئے ہائیکورٹ کا برادر شوگر مل کی چینی کا ...

لاہور(نامہ نگارخصوصی )چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے کسانوں کوگنے کی رقم کی عدم ادائیگی پربرادر شوگر مل کی چینی کا تمام سٹاک فروخت کر کے رقم عدالتی اکاؤنٹ میں جمع کرانے کا حکم دے دیاہے۔برادر شوگر مل مبینہ طور پر وزیراعظم کے قریبی عزیز وں کی ملکیت ہے ۔عدالت نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ کسانوں کے خون پسینے کی رقم کسی کو ہڑپ کرنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی،عدالت ان کے بنیادی حقوق کے تحفظ کو ہر صورت یقینی بنائے گی۔چیف جسٹس نے کیس کی سماعت شروع کی توکسانوں کے وکلاء نے عدالت کو آگاہ کیا کہ نجی شوگر ملوں نے کسانوں کی جانب سے گنا فراہم کرنے کے باوجود 82کروڑ روپے کی رقم دبا رکھی ہے جس سے انہیں نئے سیزن کی کاشتکاری میں بھی مشکلات درپیش ہیں جبکہ وہ شدید مالی بحران کا سامنا کر رہے ہیں۔ عدالتی حکم پر شوگر کین کمشنر نے بینکوں کے پاس شوگر مل کی رہن شدہ چینی اور کین کمشنر کے پاس موجود چینی کے سٹاک کی تفصیلات سے عدالت کو آگاہ کیا۔انہوں نے عدالت کو بتایا کہ کین کمشنر کے پاس چینی کی 4 لاکھ بوریاں اور بینکوں کے پاس 2لاکھ 9 ہزار بوریاں موجود ہیں،کین کمشنر کے پاس موجود شوگر کی رقم ایک کروڑ 20لاکھ روپے کے قریب بنتی ہے جبکہ شوگر مل نے کسانوں کے بیاسی کروڑ روپے ادا کرنے ہیں۔عدالت نے ریمارکس دئیے کہ کسانوں کی جمع پونجی کا تحفظ کرنا عدالت کی ذمہ داری ہے۔عدالتی حکم کے باوجود مل انتظامیہ کی عدم پیشی پرعدالت نے سخت اظہار برہمی کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر بورڈ آف ڈائریکٹرز کو طلب کر لیا،عدالتی استفسارپر عدالت کو آگاہ کیا گیا کہ برادر شوگر مل میں وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کے بھی شئیرز موجود ہیں۔عدالت نے کسانوں کے پیسے دبانے پر برادر شوگر مل کی چینی کا تمام سٹاک فروخت کر کے رقم عدالتی اکاونٹ میں جمع کرانے کا حکم دے دیاہے،عدالت نے شوگر مل کے دیگر اثاثہ جات کی فروخت کے لئے فریقین کے وکلا ء کو معاونت کے لئے طلب کر تے ہوئے سماعت 15اگست تک ملتوی کر دی ہے۔

شوگر مل

مزید : صفحہ آخر


loading...