تیسری عالمی جنگ کا خطرہ سنگین ہو گیا، مغربی ممالک کو جواب دینے کیلئے روسی صدر نے خطرناک ترین ہتھیار جگہ جگہ سرحد پر لگا دیا، ایٹمی میزائل بھی تیار!

تیسری عالمی جنگ کا خطرہ سنگین ہو گیا، مغربی ممالک کو جواب دینے کیلئے روسی صدر ...
تیسری عالمی جنگ کا خطرہ سنگین ہو گیا، مغربی ممالک کو جواب دینے کیلئے روسی صدر نے خطرناک ترین ہتھیار جگہ جگہ سرحد پر لگا دیا، ایٹمی میزائل بھی تیار!

  


ماسکو (نیوز ڈیسک) امریکا اور یورپ کی افواج مشرقی یورپ کے ممالک کی سرحدو ں پر جمع ہونے کا سلسلہ کئی ماہ سے جاری تھا، جس کے جواب میں روس کی جانب سے ایٹمی ہتھیار وں سے لیس میزائلوں کو سرحدوں کے قریب پہنچائے جانے کی خبر نے دنیا میں تہلکہ برپا کر دیا ہے۔

اخبار ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق روس اپنی سرحدو ں پرواقع اتالی کے جنگلات میں انٹر کانٹینینٹل بالیسٹک میزائلوں سے لدے ٹرک بھیج رہا ہے۔ روسی وزارت دفاع کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ تقریباً 400 فوجی ٹرک میزائلوں کے ہمراہ ڈرون اور جنگی روبورٹ بھی لیکر جارہے ہیں۔

’امریکا میں بڑی تباہی آنے والی ہے، ہزاروں لوگ مارے جائیں گے‘ ماہرین نے خطرناک ترین پیشنگوئی کردی، خطرے کی گھنٹی بجادی

امریکہ اور اس کے اتحادی نیٹو ممالک یورپ کی سرحدوں پر اپنی افواج پہلے ہی تعینات کر چکے ہیں جبکہ روس کی جانب سے بھی ردعمل کے طور پر فوجی دستوں کو سرحدوں کے قریب پہنچایا جاچکا ہے۔ دفاعی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اب تیسری جنگ عظیم کا خطرہ حقیقت کا روپ دھارتا نظر آرہا ہے۔ روس کی جانب سے ایٹمی ہتھیاروں سے لیس میزائلوں کو سرحدوں کی جانب روانہ کرنا ایک انتہائی خطرناک اشارہ قرار دیا جا رہا ہے۔

امریکہ اور اس کے اتحادی روسی میزائلوں سے بچنے کیلئے اپنی طاقتورمیزائل دفاعی شیلڈ پر انحصار کر رہے ہیں مگر روس کی میزائل کور کے کمانڈر کرنل جنرل سرگئی کاراکیف پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ امریکہ کی میزائل دفاعی شیلڈ روس کے ایٹمی میزائلوں کو روکنے میں کامیاب نہیں ہو سکے گی۔ واضح رہے کہ امریکی دفاعی ادارے پینٹاگون کے سینئر افسران بھی خبردار کر چکے ہیں کہ نیٹو ممالک روس کے حملے کا سامنا تین دن سے زیادہ نہیں کر سکیں گے اور بالاآخر شکست امریکہ اور نیٹو ممالک کا مقدر بنے گی۔

مزید : بین الاقوامی


loading...